”ان مردوں کو سزا دی جائے تو اپنی بیوی کو طلاق دیتے ہوئے۔۔۔“ اسلامی نظریاتی کونسل نے پاکستانی خواتین کے دل کی بات کہہ دی

”ان مردوں کو سزا دی جائے تو اپنی بیوی کو طلاق دیتے ہوئے۔۔۔“ اسلامی نظریاتی ...
”ان مردوں کو سزا دی جائے تو اپنی بیوی کو طلاق دیتے ہوئے۔۔۔“ اسلامی نظریاتی کونسل نے پاکستانی خواتین کے دل کی بات کہہ دی

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) اگرچہ اسلام نے شوہر کو طلاق کا حق دیا ہے لیکن بیک وقت تین طلاق دینے کی سختی سے ممانعت بھی کی گئی ہے۔ اس کے باوجود ہمارے معاشرے میں طلاق ثلاثہ کا رجحان بہت زیادہ پایا جاتا ہے اور شوہر کھڑے کھڑے ایک ہی سانس میں تین طلاقیں دے کر بیوی کو بے سروسامانی کے عالم میں گھر سے نکال باہر کرتے ہیں۔ اب اسلامی نظریاتی کونسل بھی خواتین کے ساتھ ہونے والے اس ظلم پر سامنے آ گئی ہے۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق اسلامی نظریاتی کونسل کے قانونی شعبے نے تجویز پیش کی ہے کہ ’فیملی لاءمیں ترمیم کرکے ایسے مردوں کے لیے سزا رکھی جائے جو اپنی بیویوں کو تین طلاق دیں۔“

اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر قبلہ ایاز کا کہنا تھا کہ ”تین طلاق دینے والوں شوہروں کو سزا دی جائے تو آئندہ کوئی اپنی بیوی کے ساتھ ایسا سلوک نہیں کرے گا اور طلاق کی شرح میں بھی کمی واقع ہو گی۔ بھارتی سپریم کورٹ گزشتہ سال اگست میں تین طلاق پر پابندی عائد کر چکی ہے جس کے بعد ہم نے بھی رواں سال کے آغاز میں پاکستان میں بھی اس پر پابندی عائد کرنے اور خلاف ورزی کرنے والے مردوں کو سزا دینے کی تجویز دی تھی۔ ہمیں ملک بھر سے تین طلاق کے متعلق خواتین کی شکایات موصول ہوتی رہتی ہیں۔ ہم نئی حکومت کے اقتدار سنبھالنے کا انتظار کر رہے ہیں جس کے بعد ہم اس تجویز پر عملدرآمد کرانے کی کوشش کریں گے۔“

مزید : علاقائی /اسلام آباد