”مجھے ن لیگ کے ایک لیڈر نے بتایاوہ مریم نواز سے 13جولائی کو لندن میں ملا اور پھر ایک ہفتے بعد اڈیالہ جیل میں، صرف 7دن میں ہی ان کی ۔ ۔ ۔“

”مجھے ن لیگ کے ایک لیڈر نے بتایاوہ مریم نواز سے 13جولائی کو لندن میں ملا اور ...
”مجھے ن لیگ کے ایک لیڈر نے بتایاوہ مریم نواز سے 13جولائی کو لندن میں ملا اور پھر ایک ہفتے بعد اڈیالہ جیل میں، صرف 7دن میں ہی ان کی ۔ ۔ ۔“

  


راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیراعظم نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز اپنے والد اور شوہر سمیت اڈیالہ جیل میں اسیری کی زندگی گزار رہی ہیں اور ان سے ملاقات کرنیوالوں کے بقول مریم نواز کا وزن تیزی سے گررہاہے ۔

روزنامہ ایکسپریس میں جاوید چوہدری نے لکھاکہ ’مریم نواز جیل کے ووکیشنل انسٹی ٹیوٹ کے ہال میں قید ہیں، انھیں چارپائی اور گدابھی دے دیا گیا ، مریم نواز کے بارے میں پاکستان مسلم لیگ ن کے ایک لیڈر نے بتایا”میں نے زندگی میں ان سے زیادہ ہائی فائی خاتون نہیں دیکھی‘ میں 12 جولائی کو لندن میں ان سے ملا تھا اور پھر 19 جولائی کو جیل میں ان سے ملاقات ہوئی۔یہ ایک ہفتے میں سکڑ کر رہ گئی ہیں‘ میں نے 19 جولائی کو اپنی آنکھوں سے میاں نواز شریف کی پوری قمیض بھی پسینے سے شرابور دیکھی‘ مریم نواز کی 13 سال کی بیٹی ہمارے ساتھ تھی‘ وہ ماں سے لپٹ کر رونے لگی‘ ہم سب کی آنکھوں میں آنسو آ گئے“۔

جاوید چوہدری نے مزید لکھا کہ ’میں نے یہ داستان سنی تو میں نے توبہ کی اور اللہ تعالیٰ سے گناہوں کی معافی مانگی‘ میں دل سے سمجھتا ہوں میاں نواز شریف کی غلطیاں اپنی جگہ لیکن یہ اس سلوک کو ڈیزرو نہیں کرتے‘ ان کے ساتھ زیادتی ہو رہی ہے‘ عمران خان الیکشن جیت چکے ہیں‘ ہدف پورا ہو چکا ہے لہٰذا اب نواز شریف کو گھر جانے کی اجازت مل جانی چاہیے‘۔

مزید : جرم و انصاف /علاقائی /پنجاب /راولپنڈی


loading...