وزیر تعلیم سندھ کا اسکولوں میں درسی کتب نہ پہنچنے کی شکایات کا نوٹس 

  وزیر تعلیم سندھ کا اسکولوں میں درسی کتب نہ پہنچنے کی شکایات کا نوٹس 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیر تعلیم سندھ سید سردار علی شاہ نے صوبے کے مختلف اسکولوں میں ابھی تک درسی کتب نہ پہنچنے کی شکایات کا سخت نوٹس لے لیا ہے اور سیکریٹری تعلیم کو متعلقہ ٹی ای اوز کے خلاف سخت ایکشن لینے کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق وزیر تعلیم سید سردار علی شاہ نے سرکاری اسکولوں میں طلبا کو درسی کتب نہ ملنے کے معاملے پر سندھ ٹیکسٹ بورڈ کے  چیئرمین آغا سہیل سے پوچھ گچھ کی تو انہوں نے وزیر تعلیم کو اپنی بریفنگ میں بتایا کہ سندھ ٹیکسٹ بک بورڈ کی طرف سے صوبے کے تمام اضلاع اور تعلقوں میں کتابیں بھجوادی گئیں ہیں, تاہم انہیں اطلاعات ملیں ہیں کہ گڈاپ ٹاؤن،بن قاسم ٹاؤن، شکارپور،گڑھی یاسین،لکھی، خانپور اور تعلقہ سکھر سمیت دیگر تحصیلوں میں وہاں کے تعلقہ ایجوکیشن افسران نے کتابیں اسکولوں میں تقسیم کرنے کے بجائے ابھی تک گوداموں میں رکھ دی ہیں. اس موقع پر وزیر تعلیم سید سردار علی شاہ نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سیکریٹری تعلیم قاضی شاہد پرویز کو احکامات دیے کہ جن جن تعلقہ ایجوکیشن افسرز نے ابھی تک درسی کتب اسکولوں میں تقسیم نہیں کی ان کے خلاف فوری طور پر سخت ایکشن لیں،انہوں نے کہا کہ درسی کتب طلبا کو نہ دینا اور گوداموں میں ڈمپ کردینا مجرمانہ لاپرواہی کے مترادف ہے اور میں اس قسم کی کوتاہی کسی صورت برداشت نہیں کرونگا۔انہوں نے سیکریٹری تعلیم کو ہدایت کی کہ یہ صوبے کے تمام اسکولوں میں درسی کتب کی ترسیل کو یقینی بنایا جائے اور جو بھی افسر کسی قسم کی کوتاہی کا مرتکب ہو اس کے خلاف فوری ایکشن لیں.

مزید :

صفحہ اول -