پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کے تحت سزاؤں کو مزید سخت کرنے کا فیصلہ

پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کے تحت سزاؤں کو مزید سخت کرنے کا فیصلہ
پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کے تحت سزاؤں کو مزید سخت کرنے کا فیصلہ

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)صوبائی وزیر خوراک سمیع اللہ چوہدری اور چیئرمین پنجاب فوڈ اتھارٹی عمرتنویربٹ کی زیرصدارت ہیڈکوارٹر میں اہم اجلاس ہوا،جس میں   پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کے تحت سزاؤں کو مزید سخت کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر خوراک اور چیئرمین پنجاب فوڈ اتھارٹی کی زیرصدارت اجلاس میں ڈی جی فوڈ اتھارٹی کیپٹن (ر) محمد عثمان نے ملاوٹ کے خلاف کی گئی کارروائیوں پر تفصیلی بریفنگ دی،پنجاب فوڈاتھارٹی گزشتہ ایک سال میں 40 کروڑ سے زائد کا ملاوٹ زدہ مال تلف کرچکی ہے۔اس موقع پر ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ ملاوٹ جیسے سنگین جرم پر سزائیں کم ہونے کی وجہ سے مافیابار بار یہ کام کرتا ہے،کمزور قوانین کے باعث گرفتار ہونے والے مجرم بہت جلد ضمانت پر رہا ہو جاتے ہیں۔چیئرمین پنجاب فوڈ اتھارٹی عمر تنویر بٹ نے کہا کہ دنیا بھر میں ملاوٹ پر کڑی اور مثالی سزائیں دی جاتی ہیں،سزائیں کم ہوں تو لالچی لوگ باربار ملاوٹ کا گھناؤنا کاروبار کرتے ہیں۔انہوں نے اس عزم کا اظہار کیاکہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت عوام کے تحفظ کے لیے سخت فیصلوں سے نہیں کترائے گی۔صوبائی وزیر خوراک نے کہا کہ پنجاب اسمبلی میں سزاؤں کو مزید سخت بنانے کے لیے جلدبل پیش کیا جائے گا،ملاوٹ کا خاتمہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی اولین ترجیحات میں سے ایک ہے،سزائیں صرف ملاوٹ کرنے والوں کے لیے بڑھانے پر غور کر رہے ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ قوم کے مستقبل سے کھیلنے والوں کا کھلے عام پھرنا لمحہ فکریہ ہے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -