اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ

اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ

  

وزیراعظم کے خصوصی معاونین کی تعداد اور دوہری شہریت کے حوالے سے ایک قانون دان ہی کی دائر کردہ درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے ارشاد فرمایا ہے کہ دستور نے کسی معاون خصوصی کی دوہری شہریت پر کوئی قدغن عائد نہیں کی۔صرف قانون ساز اداروں کا انتخاب لڑنے کے لیے دوہری شہریت کے حاملین اہل نہیں ہیں (نتیجتاً وہ کابینہ کے رکن بھی نہیں بن سکتے) جہاں تک خصوصی معاونین کا تعلق ہے، وزیراعظم اس حوالے سے بااختیار ہیں،ان کی تعداد پر بھی پابندی عائد نہیں کی جا سکتی۔وزیراعظم کی خصوصی معاون تانیہ اندروس نے دوہری شہریت کے حوالے سے(بقول خود) جاری ہونے والی بحث کی وجہ سے استعفیٰ دیا تھا، اس کے بعد ایسے دوسر ے معاونین کے معاملے پر بھی بحث جاری تھی۔ فاضل عدالت کے اس فیصلے سے ان صاحبان نے اطمینان کا سانس لیا ہو گا۔اسی نوعیت کی ایک درخواست لاہور ہائی کورٹ میں بھی دائر کی جا چکی ہے، جس کا فیصلہ ابھی ہونا ہے،ممکن ہے یہ معاملہ بالآخر سپریم کورٹ تک پہنچے، اور اس حوالے سے جاری بحث قطعی طور پر نبٹا دی جائے۔

مزید :

رائے -اداریہ -