صدر ٹرمپ کا امریکہ میں 'ٹک ٹاک' پر پابندی لگانے کا فیصلہ

صدر ٹرمپ کا امریکہ میں 'ٹک ٹاک' پر پابندی لگانے کا فیصلہ
صدر ٹرمپ کا امریکہ میں 'ٹک ٹاک' پر پابندی لگانے کا فیصلہ

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن) دنیا کی دو بڑی معیشتوں کے درمیان کشیدگی کم نہ ہوسکی۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کی مشہور ایپ ٹک ٹاک پر پابندی کافیصلہ کرلیا۔

برطانوی خبررساں ادارے کے مطابق  صدر ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ جلد ا زجلد ٹک ٹاکپ پر پابندی کے لیےایگزیکٹو آرڈر جاری کرنے والے ہیں۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا ٹک ٹاک سے متعلق کہنا ہے کہ سیکیورٹی خدشے کے پیش نظر ٹِک ٹاک پر امریکا میں پابندی عائد کر رہے ہیں۔

امریکی حکام کے مطابق چینی انٹلیجنس کے ذریعے اس سروس کو استعمال کیا جا سکتا ہے۔

امریکی حکام کے مطابق چینی انٹیلیجنس کے ذریعے اس سروس کو استعمال کیا جا سکتا ہے۔

خیال رہے کہ چند روز قبل امریکا کے وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ٹک ٹاک سمیت دیگر چینی سوشل میڈیا ایپس پر پابندی لگانے کا عندیہ دیا تھا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل امریکی اسٹیٹ سیکریٹری مائیک پومپیو کا کہنا تھا کہ ٹک ٹاک سمیت چینی سوشل میڈیا ایپس پر پابندی لگانے پر غور کررہے ہیں۔

امریکی اسٹیٹ سیکریٹری مائیک پومپیو نے امریکی میڈیاکو انٹرویو میں کہا تھا کہ ٹک ٹاک سمیت چینی سوشل میڈیا ایپس پر پابندی زیر غور ہے۔

اس سے قبل امریکی حکام ٹک ٹاک کےصارفین کے ڈیٹا ہینڈلنگ سے متعلق تشویش کا اظہار بھی کرچکے ہیں۔

 جیو نیوز کے مطابق نومبر 2019 میں امریکا نے جاسوسی کے خطرے کے پیش نظر اپنے فوجیوں کو چینی معروف لپ سِنک ایپلی کیشن ٹک ٹاک کے استعمال سے روک دیا تھا۔

چینی کمپنی بائٹ ڈانس کے ریکارڈ کے مطابق ٹک ٹاک ایپیلی کیشن کے امریکا میں 2 کروڑ 65 لاکھ فعال صارفین ہیں جن کی عمریں 16 سے 24 سال کے درمیان ہیں۔

گزشتہ دنوں بھی محققین نے انکشاف کیا تھا کہ ٹک ٹاک سمیت دیگر 53 آئی او ایس ایپس صارفین کے کلپ بورڈ کی حساس معلومات کی جاسوسی کر رہی ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -