کاروباری طبقہ مسلسل بڑھتی مہنگائی سے پریشان ہے: پیاف

  کاروباری طبقہ مسلسل بڑھتی مہنگائی سے پریشان ہے: پیاف

  

        لاہور(لیڈی رپورٹر) چیئرمین پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسو سی ایشنز فرنٹ (پیاف) فہیم الرحمان سہگل نے وائس چیئرمین پیاف راجہ عدیل اشفاق کے ہمراہ کہا ہے کہ کاروباری طبقہ بشمول عام آدمی ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی سے پریشان ہے، مہنگائی پر قابو پانا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے۔،متعلقہ حکام اس پر ایکشن لیں تاکہ مہنگائی میں بتدریج کمی ہو سکے۔فیول ایڈجسمنٹ کی مد میں ہر ماہ بجلی کی قیمت میں اضافہ اشیاء و خدمات کی قیمتوں میں اضافے کا باعث بن رہا ہے۔ حکومت مہنگائی پر قابو پانے کے ساتھ ساتھ لوگوں کی قوت خرید میں بھی اضافہ کرے، بنیادی اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ کو کنٹرول کرنے کیلئے انکی قیمتوں کو کم کر کے منجمد کر دیا جائے اور اس پر سختی سے عمل کروایا جائے۔ تاجر و صنعتکار ٹیکس دینے کے باوجود پریشانی کا شکار ہیں، مگر بیورو کریسی انھیں سہولیات دینے کی بجائے مزید مشکلات پیدا کر رہی ہے، حکومت متعلقہ سٹیک ہولڈرز کو آن بورڈ لے تاکہ مہنگائی میں کمی لائی جا سکے۔پٹرولیم مصنوعات،شرح سود میں اضافہ،پیچیدہ ٹیکس نظام اور ڈالر کے ریٹ میں آئے روز اضافہ کے باعث پیداواری لاگت میں اضافہ کی وجہ سے ملک بھر کے تاجر و صنعتکار اذیت کا شکار ہیں۔

۔ تاجر و صنعتکار معیشت کے لئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں۔ زیادہ پیداواری لاگت اور عالمی منڈی میں سخت مسابقت کی وجہ سے کاروباری افراد پہلے ہی مشکلات سے دوچار ہیں۔تاجروں کو اعتماد میں لئے بغیر پالیسیز کامیاب نہیں ہوتیں۔ بزنس کمیونٹی کی نمائندہ تنظیموں کو مشاورتی عمل میں شامل کیا جائے۔آئی ایم ایف کے تمام مطالبات پر عملددرآمد سے قبل سٹیک ہولڈرز سے مشاورت ضروری ہے۔

مزید :

کامرس -