پاکستان کے مسائل عارضی، حل کی کوششیں جاری، وزارت خزانہ سٹیٹ بینک

پاکستان کے مسائل عارضی، حل کی کوششیں جاری، وزارت خزانہ سٹیٹ بینک

  

       اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی وزارت خزانہ اوراسٹیٹ بینک نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کے مسائل عارضی نوعیت کے ہیں، ملکی مسائل کے حل کے لیے پوری قوت صرف کی جا رہی ہے۔مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ فروری سے پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائرکم ہونا شروع ہوئے، زرمبادلہ ذخائر میں کمی کی وجہ آمد زر کی نسبت انخلائے زرکا زیادہ ہونا ہے، آمدِ زر میں کمی آئی ایم ایف کے ا?ئندہ جائزے میں تاخیر کی سبب آئی۔وفاقی وزارت خزانہ و اسٹیٹ بینک کا کہنا ہیکہ  آئی ایم ایف جائزیکی تکمیل کے لیے تمام پیشگی اقدامات کرلیے ہیں، 1.2 ارب ڈالر کی قسط کے اجرا کے لیے باضابطہ اجلاس آئندہ ہفتوں میں متوقع ہے، مالیاتی اور زری پالیسی دونوں سخت کردی ہیں۔بیان میں کہا گیا ہ ے کہ آئندہ 12 ماہ کے لیے 4 ارب ڈالر کے اضافی قرضوں کی منصوبہ بندی کی گئی ہے، ان رقوم کا انتظام مختلف ذرائع  سے کیا جا رہا ہے، ان میں وہ دوست ممالک بھی شامل ہیں جنہوں نیجون 2019 میں آئی ایم ایف پروگرام کے ا?غاز کے وقت پاکستان کی مدد کی تھی۔وزارت خزانہ و اسٹیٹ بینک کا کہنا ہیکہ  جاری کھاتیکے خسارے کو  قابو میں کرنے کے لیے اہم اقدامات کییگئے ہیں، آئندہ اس خسارے کو قابو میں کرنے کے لیے پالیسی ریٹ 800 بیسز پوائنٹس بڑھایا گیا، درآمدی بل کو قابو میں کرنے کے لیے عارضی اقدامات کیے گئے ہیں، خسارہ آئندہ مہینوں میں کم ہوگا تو یہ اقدامات نرم کردیے جائیں گے، اس میں گاڑیاں، موبائل فون اور مشینری درآمدکرنے سے پہلے  پیشگی منظوری کی شرط شامل ہے۔وزارت خزانہ و اسٹیٹ بینک کے مطابق جولائی میں درآمدی بل میں نمایاں کمی ہوئی، جولائی میں زرمبادلہ کی ادائیگیاں جون کے مقابلے میں نمایاں طور پرکم تھیں،مجموعی طور  پر جولائی میں ادائیگیاں 6.1 ارب ڈالر پر مستحکم تھیں۔مشترکہ بیان میں کہا گیا ہیکہ روپے کی قدر وقتی طور پرکم ہوئی ہے، توقع ہے اگلے چند ماہ کے دوران روپے کی قدر بڑھ جائے گی، روپے کی قدر ملکی سیاست اور  آئی ایم ایف کے  پروگرام کے بارے میں تشویش پرکم ہوئی،ملک میں ڈیزل اور فرنس آئل کا ذخیرہ 5 سے 8 ہفتوں کے لیے کافی ہے، حالیہ بارشوں اور ڈیموں میں پانی کے ذخیرے سے پن بجلی میں اضافے کا امکان ہے،  توقع ہے مستقبل میں درآمدی ایندھن سے بجلی پیدا کرنے کی ضرورت کم ہوجائے گی۔بیان میں مزید کہا گیا ہیکہ مستقبل میں درآمدی بل میں تخفیف کا امکان ہے، مجموعی طور پر آئندہ مہینوں میں درآمدات میں کمی متوقع ہے۔

وزارت خزانہ

مزید :

صفحہ اول -