خام مال کی امپورٹ بند، اوپن مارکیٹ سے 40ادویات غائب 

خام مال کی امپورٹ بند، اوپن مارکیٹ سے 40ادویات غائب 

  

        کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)وفاقی حکومت کے سیلز ٹیکس کی وجہ سے خام مال کی امپورٹ رکنے کے باعث مارکیٹ (بقیہ نمبر41صفحہ6پر)

سے 40 سے زائد ادویات کی قلت ہو گئی ہے،مارکیٹ میں اہم ادویات کی مصنوعی قلت پیدا کرکے سستی ترین ادویات کو مہنگے داموں سر عام فروخت کیا جارہا ہے،بلڈ پریشر اور دل کی ادویات جو کہ ہر پانچواں شخص استعمال کرتا ہے،مارکیٹ میں بخار اور درد کے لیے استعمال ہونے والی پیناڈول مارکیٹ سے غائب ہے، ذہنی تناو، جوڑوں کے درد، دمہ اور کینسر کی ادویات بھی مارکیٹ میں نہیں جبکہ دل کا دورہ روکنے والی، پھیپھڑوں کے انفیکشن، خون پتلا کرنے والی، ذیابیطس، دل میں جلن، بلڈ پریشر اور ہیپاٹائٹس کی ادویات بھی دستیاب نہیں اس صورتحال پر مریضوں کو شدید مشکلا ت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،پینا ڈول،وینٹولین،ایپی وال گولیوں سمیت ہیپرین،بنزیٹیک انجکشن مارکیٹ سے غائب ہیں،40سیزائد میڈیسن کو مصنوعی طور پر مارکیٹ سے غائب کر کے مہنگے داموں بیچنے سے میڈیسن مافیا نے روزانہ کی بنیاد پر کروڑوں روپے کمانا شروع کر دیئیجبکہ مصنوعی قلت کو ختم کرنے کیلئے حکومت  سرکاری محکموں کی جانب سیایک بھی ایسا اقدام نہیں کیا گیا کہ مافیا کے خلاف ایکشن لیاجاسکے،اس حوالیسیذرائع کاکہناہے کہ وفاقی حکومت کے سیلز ٹیکس کی وجہ سیخام مال کی امپورٹ رک گئی ہے، سیلز ٹیکس کیباعث ادویات کی پیداواری لاگت میں بھی اضافہ ہوا ہے، سیلز ٹیکس ختم ہونے پر ہی ادویات کی مینو فیکچرنگ ممکن ہے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -