ملتان: ڈرگ مافیا کا ”حملہ“ سڑکوں پر ”زندہ لاشیں“ سماجی تنظیمیں سیمینار ز ریلیوں تک محدود

ملتان: ڈرگ مافیا کا ”حملہ“ سڑکوں پر ”زندہ لاشیں“ سماجی تنظیمیں سیمینار ز ...

  

        ملتان (سٹی رپورٹر) سرکاری و غیر سرکاری اداروں کی بے حسی،مہنگائی،غربت، بے روزگاری، کے باعث خاندان کے خاندان سڑکوں پر رہنے، بھیک مانگنے، اور نشہ کرنے پر مجبور ہو گئے ہیں، شہر کے مختلف علاقوں، قلعہ کہنہ قاسم باغ، لاری اڈہ، بوسن روڑ، باغ لانگے خان، گھنٹہ گھر چوک، چوک کمہاراں والا، گارڈن ٹاؤن، پرانا شجاع آباد روڑ، اسٹیٹ ایریا، مظفر آباد سمیت دیگر علاقوں میں مردو خواتین معصوم بچوں کے ہمراہ سڑکوں پر (بقیہ نمبر36صفحہ7پر)

بھیک مانگنے پر مجبو ر ہیں جبکہ کئی پڑھے لکھے نوجوان روزگار کے مواقع نہ ملنے اور گھروں میں ہونے والی ناچاکیوں کی وجہ سے نشہ کے عادی بن کر سڑکوں کو انجکشن لگاتے ہوئے نظر آتے ہیں، سرکاری اداروں کی جانب سے لاکھوں روپے کے فنڈز ہونے کے باجود سڑکوں کو رہائش پذیر اور بھیک مانگنے والے افراد کے لئے کسی قسم کے کوئی اقدامات نہیں کئے گئے ہیں، تفصیل کے مطابق حالیہ دنوں میں ہونے والی مہنگائی، بے روز گاری اور غربت کی نے سفید پوش لوگوں سے بھرم میں چھین لیا ہے بتایا جاتاہے کہ، اپنا گھر نہ رکھنے والے افراد بھی محنت مزدوری کرکے کرایہ کے مکان میں عارضی چھت کے نیچے اپنے معصوم بچوں کے ہمراہ زندگی بسر کر لیتے تھے لیکن، مہنگائی بے روزگاری غربت اور بجلی کے بلوں میں ہونے والے کئی کئی گناہ اضافہ نے ان سے یہ بھرم بھی چھین لیا ہے جس کی وجہ سے وہ فیملی ہمراہ سڑکوں پر رہنے اور بھیک مانگنے پر مجبور ہو گئے ہیں، ملتان کے مختلف علاقوں قلعہ کہنہ قاسم باغ سمیت دیگر علاقوں میں خواتین جھونپڑیاں ڈال کر بھیک مانگ کر اپنے بچوں کا پیٹ پالنے پر مجبور ہیں، جبکہ ڈگریاں ہاتھوں میں تھامے نوجوان روزگار کے مواقع نہ ملنے پر مایوسی کا شکار ہو کر نشہ کا شکا رہو گئے ہیں ملتان کے مختلف علاقوں میں نوجوانہ نشہ کا انجکشن لگاتے ہوئے نظر آتے ہیں جوکہ ہمارے سرکاری و غیر سرکاری اداروں کے لئے لمحہ فکریہ ہے، جن کی جانب سے تاحال بھی کسی قسم کے کوئی اقدامات نہیں کئے جا رہے ہیں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -