17سال شوہر کی قید میں رہنے والی خاتون نے انتہائی دردناک آپ بیتی دنیا کو سنا دی

 17سال شوہر کی قید میں رہنے والی خاتون نے انتہائی دردناک آپ بیتی دنیا کو سنا دی
 17سال شوہر کی قید میں رہنے والی خاتون نے انتہائی دردناک آپ بیتی دنیا کو سنا دی

  

برازیلیا(مانیٹرنگ ڈیسک) 17سال تک بچوں سمیت اپنے شوہر کی قید میں رہنے والی برازیلی خاتون نے بالآخر اپنی بپتا دنیا کو سنا دی۔ دی سن کے مطابق لوئز انٹونیو سانٹوس سلوا نامی ملزم اپنی بیوی اور دو بچوں کے ہمراہ برازیل کے شہر گواراتیبا میں رہائش پذیر تھا جہاں اس نے 17سال قبل گھر کو ایک قید خانے میں تبدیل کیا اور بیوی اور دونوں بچوں کو 17سال تک قید میں رکھا۔ اس دوران خاتون اور اس کے بچوں کا بیرونی دنیاکے ساتھ کوئی رابطہ نہیں ہوا۔

رپورٹ کے مطابق اب اس کے دونوں بچوں کی عمریں 19اور 22سال ہیں۔ خاتون نے بتایا ہے کہ ملزم قید میں اسے اور اس کے بچوں کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بناتا تھا اور کئی کئی دن تک کھانا نہیں دیتا تھا۔ گولوبو ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے خاتون نے بتایا ہے کہ میں نے اور میرے بچوں نے یہ 17سال انتہائی اذیت میں گزارے ہیں۔ ہم پانی کی ایک بوند اور کھانے کے ایک لقمے کو ترستے تھے۔ وہ ہم تینوں کو الٹا لٹکا کر ڈنڈوں سے تشدد کا نشانہ بناتا تھا۔کئی مواقع پر اس نے ہمیں پھانسی دے کر موت کے گھاٹ اتارنے کی کوشش بھی کی۔ 

رپورٹ کے مطابق کسی نامعلوم شخص کے اطلاع دینے پر پولیس نے گزشتہ دنوں چھاپہ مار کر ماں اور دونوں بچوں کو اس سفاک شخص کی قید سے رہا کروایا ہے۔پولیس آفیسرز کے مطابق وہ کمرہ کچرے کے ڈھیر کا منظر پیش کر رہا تھا جس میں ملزم نے ماں اور بچوں کو قید کیا ہوا تھا۔ کمرے سے تعفن اٹھ رہا تھا اور تینوں انتہائی ناگفتہ بہ حالت میں رہ رہے تھے۔ جب آفیسرز پہنچے، اس وقت بھی ماں اور بچوں کے ہاتھ پاؤں بندھے ہوئے تھے۔ہمسایوں کا کہنا ہے کہ دونوں بچے غذائی قلت کی وجہ سے قد اور جسامت سے ایسے لگ رہے تھے جیسے ان کی عمریں آٹھ دس سال ہوں۔ پولیس نے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے اور مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -