فضائی سفر کے دوران تھکاوٹ اور کمردرد سے ممکنہ نجات کا طریقہ ماہرین نے بتادیا

فضائی سفر کے دوران تھکاوٹ اور کمردرد سے ممکنہ نجات کا طریقہ ماہرین نے بتادیا
فضائی سفر کے دوران تھکاوٹ اور کمردرد سے ممکنہ نجات کا طریقہ ماہرین نے بتادیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) طویل فضائی سفر کرنے سے مسافروں کو جیٹ لیگ(Jet Lag) اور کمر درد لاحق ہونے کی شکایت ہوتی ہے۔ اب ماہرین نے فضائی سفر سے متعلق اس تھکاوٹ اور کمر درد سے نجات کا طریقہ بتا دیا ہے۔ دی سن کے مطابق اے ایکس اے گلوبل ہیلتھ کیئر سے وابستہ ماہرین کا کہنا ہے کہ مسافر جتنی جلدی خود کو نئے ٹائم زون کا عادی بنا لیں، وہ اتنا ہی وہ فضائی سفر سے لاحق ہونے والی تھکان اور کمر درد سے محفوظ رہتے ہیں۔ 

ماہرین کا کہنا تھا کہ نئے ٹائم زون کا عادی ہونے میں لوگوں کو جتنی دقت پیش آ رہی ہو، ان کی نیند بھی اتنی ہی متاثر ہوتی ہے جس کے نتیجے میں ان کی تھکن بھی اتنی ہی شدید ہوتی ہے اور انہیں بدہضمی، قبض، پیچس اور پیٹ میں گیس جیسے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ نئے ٹائم زون کا عادی ہونے کے لیے سفر سے پہلے اور سفر کے دوران ہی ہمیں خود کو تیار کرنا شروع کر دینا چاہیے۔ 

ماہرین کا کہنا تھا کہ ”آپ جس وقت دوسرے ملک میں لینڈ کرنے والے ہیں، وہ وقت اس نئے ٹائم زون کا عادی ہونے کے حوالے سے انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے۔ اگر آپ کی پرواز صبح کے وقت لینڈ ہونے والی ہے تو دوران سفر خوب سوئیں اور کھانے سے احتراز برتیں۔ حتی الامکان کوشش کریں کہ جس ملک میں آپ لینڈ کرنے والے ہیں، وہاں صبح ہونے کے وقت تک جہاز میں سوتے رہیں اور اس ملک کے ناشتے کے وقت تک کھانے پینے سے گریز کریں۔“

ماہرین نے بتایا کہ ”جہاز میں سونے سے پہلے دانت برش کریں اور ہاتھ منہ دھوئیں اور جب بیدار ہوں تو پھر اچھی طرح منہ دھوئیں، صاف انڈرویئر پہنیں اور ڈیوڈورنٹ استعمال کریں۔ صبح کے وقت لینڈ کرنے سے پہلے خود کو اسی طرح تیار کریں جیسے آپ اپنے گھر میں صبح کے وقت تیار ہوتے تھے۔تاہم اگر آپ کی پرواز شام کے وقت لینڈ کر رہی ہے تو کوشش کریں کہ دوران سفر جاگتے رہیں اور اپنی منزل پر پہنچ کر ہی سوئیں۔ اس وقت چونکہ وہاں سونے کا وقت ہو چکا ہو گا اور آپ کو پرواز میں بیدار رہنے کی وجہ سے آسانی سے نیند آ جائے گا، لہٰذا اس طرح آپ کو نئے ٹائم زون میں خود کو ایڈجسٹ کرنے میں آسانی ہو گی۔“

ماہرین کا کہنا تھا کہ دوران سفر کمر درد سے بچنے کے لیے اپنے بیگ کو اوپر بنے خانوں میں رکھ دیں اور دوران سفر آرام کرتے ہوئے اپنی نچلی کمر کو تکیے سے سپورٹ دیں۔ عام طور پر لوگ اپنے بیگ کو سیٹ کے نیچے رکھ دیتے ہیں تاکہ دوران سفر بیگ سے مختلف اشیاء نکالنے میں آسانی ہو۔ تاہم ایسا کرنے سے آپ کو ٹانگیں پھیلانے کے لیے کم جگہ ملتی ہے، جس کے نتیجے میں آپ تھکاوٹ اور کمر درد کا شکار ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ اگر آپ بیگ کو اوپر بنے خانوں میں رکھتے ہیں تو ایک طرف آپ کو پاؤں پھیلانے کے لیے زیادہ جگہ میسر آئے گی اور دوسری طرف بیگ سے اشیاء نکالنے کے لیے آپ کو جو بار بار اٹھنا پڑے گا، وہ بھی تھکاوٹ اور کمردرد سے بچنے کے لیے بہت فائدہ مند ہو گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -