روسی طیارہ گرانے کے بعد ترکی کا حیران کن فیصلہ، داعش کے خلاف کارروائی کیلئے ایک اور ملک کو اپنی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت دے دی

روسی طیارہ گرانے کے بعد ترکی کا حیران کن فیصلہ، داعش کے خلاف کارروائی کیلئے ...
روسی طیارہ گرانے کے بعد ترکی کا حیران کن فیصلہ، داعش کے خلاف کارروائی کیلئے ایک اور ملک کو اپنی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت دے دی

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) پیرس میں داعش کی طرف سے خوفناک حملوں کے بعد فرانس نے بھی شام میں شدت پسند تنظیم کے خلاف اپنی فضائی کارروائیوں میں تیزی لانے کا اعلان کیا تھا۔ اس سلسلے میں ایک اہم پیش رفت یہ ہوئی ہے کہ ترکی نے فرانس کو داعش کے ٹھکانوں پر بمباری کے لیے اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ دونوں ملکوں میں ایک معاہدہ ہوا ہے جس کے تحت فرانسیسی جنگی طیارے نہ صرف ترکی کی فضائی حدود استعمال کر سکیں گے بلکہ ہنگامی حالات میں ترکی کی انسرلک ایئربیس بھی استعمال کر سکیں گے۔ اس کے علاوہ معاہدے میں ترکی اس بات پر بھی متفق ہو گیا ہے کہ وہ اپنے ساحلی شہر تسوکو کے ذریعے فرانس کو جنگی سازوسامان کی نقل و حمل کی بھی اجازت دے گا۔ واضح رہے کہ یہ معاہدہ ترکی اور فرانس کے فوجی حکام کے مابین طے پایا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -