انسداد ڈینگی ،مہم ناکام ،وزیر اعلٰی کو دیئے گئے اعدد و شمار غلط نکلے

انسداد ڈینگی ،مہم ناکام ،وزیر اعلٰی کو دیئے گئے اعدد و شمار غلط نکلے

  

لاہور(جاوید اقبال) ڈینگی مچھروں کے خلاف انسداد ڈینگی مہم مکمل طور پر ناکام ہو گئی ہے۔اورصوبائی دارالحکومت سمیت صوبہ کے تین بڑے شہروں میں محکمہ صحت کی طرف سے ڈینگی کے مریضوں کے حوالے سے وزیر اعلیٰ کو پیش کیے جانے والے اعداد وشمار غلط نکلے۔محکمہ صحت اورپنجاب آئی ٹی بورڈ نے اصل تعداد کی رپورٹ دینے کی بجائے ایک فیصد بھی رپورٹ نہ دی۔جس کی بنیادی وجہ وزیر اعلیٰ کو ’’سب اچھا ہے‘‘ کی رپورٹ دے کر اپنی کارکردگی ظاہر کرنا تھا ۔محکمہ صحت کے انتہائی ذمہ دار ذرائع کے مطابق رواں موسم کے دوران لاہور سمیت تین اضلاع میں ڈینگی کے 15000مشتبہ مریض سامنے آئے مگر ان کی رپورٹس کو ’’پی سی آر‘‘ کے ذریعے تصدیق کرانے کے چکر میں بروقت نتائج نہ دے کر حقائق چھپائے گئے ۔ان مریضوں کی رپورٹس اس وقت آئیں جب وہ تندرست ہو چکے تھے ۔جس پر انہیں ڈینگی کے مریض ڈکلئیر ہی نہ کیا گیا ۔ایسے مریضوں کو ڈینگی کا مرٰض ڈکلئیر کیا گیا جن کو ہسپتالوں میں داخل کیا گیا۔اس سلسلے میں بتا یا گیا ہے کہ ان شہروں میں ڈینگی کے مریضوں کا ڈیٹا صرف چند سرکاری ہسپتالوں سے لیا گیا ۔پرائیویٹ لیبارٹریوں ،ہسپتالوں ،کلینکس سے کسی قسم کا ڈیٹا حاصل نہ کیا گیا ۔اگرامحکمہ صحت کی طرف سے ڈینگی کے مریضوں کا ڈیٹا جمع کرنے والے طریقہ کار کو سامنے رکھ کر ڈینگی کے مریضوں کی تعداد کا یقین کیا جائے توایک مریض میں ڈینگی وائرس کی تصدیق کا مطلب ہے کہ اس مریض کی رہائش گاہ کے قرب وجوار میں ایک ہزار مزید ڈینگی کے مریض موجود ہیں ۔اسی حساب سے ضلع راولپنڈی میں 350000سے زائد مریض موجود ہیں جو رواں موسم میں سامنے آئے ۔اسی طرح ملتان میں 72سے74ہزارڈینگی کے مریض رواں موسم میں سامنے آئے ۔ضلع لاہور میں رواں موسم میں ڈینگی کے مریضوں کی تعداد 33سے34ہزارمحکمہ صحت کے ’’فارمولہ‘‘ کے مطابق بنتی ہے۔مگر حقائق چھپائے گئے ۔بتا یا گیا ہے کہ اتنی بڑی تعداد میں مریضوں کی موجودگی کے بارے ماہرین کا کہنا ہے کہ آئندہ موسم میں ڈینگی کے تدارک کیلئے انتظامات نہ کیے گئے تو مریضوں کی تعداد ڈبل ہوسکتی ہے۔چونکہ ڈینگی وائرس موجود رہے اورلاروا بننے سے قبل اس کے انڈوں کو تلف کرنا ہوگا۔کیونکہ اگر لاروے بن گئے تو ڈینگی تباہی مچا سکتے ہیں ۔اس حوالے سے ماہرین کا کہنا ہے کہ محکمہ صحت اورماحولیات کی انسداد ڈینگی مہم خانہ پری ثابت ہو ئی ہے ،حکومت کو عملی اقدامات کرنا ہوں گے جبکہ مشیر صحت کا کہنا ہے کہ ڈینگی کے خلاف پورا سال مہم جاری رکھیں گے ۔حقائق مختلف ہیں مریضوں کی تعداد لاکھوں میں نہیں ہزاروں میں ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -