اسلام آبادکے پہلے بلدیاتی انتخابات میں الیکشن کمیشن کے ناقص انتظامات

اسلام آبادکے پہلے بلدیاتی انتخابات میں الیکشن کمیشن کے ناقص انتظامات

  

اسلام آباد(آئی این پی) وفاقی دارالحکومت میں ہونیوالے پہلے بلدیاتی انتخابات میں الیکشن کمیشن کے ناقص انتظامات سامنے آگئے،بیلٹ پیپرپر لگائی جانیوالی مہریں صحیح نہ ہونے کا انکشاف ہوا،ماڈل کالج فاربوائز جی سیون کے پولنگ سٹیشن پر پولنگ تاخیر سے شروع ہوئی۔بیلٹ پیپر میں بھی کئی پولنگ سٹیشنز پر سیریل کے مطابق نہ ہونے کی شکایات ملیں، امیدواروں کو فراہم کی گئی ووٹرلسٹس اورپریذائیڈنگ آفیسر کی لسٹوں میں بھی فرق دیکھا گیا،جی سیون پولنگ اسٹیشن نمبر14وارڈ نمبر5ووٹرزلسٹ نمبر503کا صفحہ نمبر10اور11غائب تھاجن میں55ووٹوں کا انداج تھا،ووٹنگ بوتھ کی تعداد کم ہونے سے ووٹرز اورعملہ کو پریشانی کا سامنا رہا۔الیکشن کمیشن کی جانب سے فراہم کردہ سٹیشنری بھی کم تعداد میں فراہم کی گئی ۔پیر کو وفاقی دارالحکومت میں ہونیوالے پہلے بلدیاتی انتخابات میں مختلف جماعتوں کے امیدواروں سمیت کئی آزاد امیدوار بھی میدان میں اترے،پولنگ عملہ نے بلدیاتی انتخابات میں الیکشن کمیشن کی ناقص کارکردگی کا رونا روتے ہوئے بتایا کہ الیکشن کمیشن نے بیلٹ پیپرپر لگائے جانیوالی مہریں انتہائی ناقص میٹریل سے بنائی گئیں تھیں،اس حوالے سے جب الیکشن کمیشن حکام سے رابطہ کیا گیا تو انھوں نے بتایا کہ بیلٹ پیپر کی مہروں کے سے حوالے سے اگر وسیع پیمانے پر شکایات موصول ہوئیں تو مہریں بنانے والی کمپنی کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے گی ،۔کئی پولنگ اسٹیشن پر عملے کی جانب سے سٹیشنری کے فقدان سمیت ووٹرز کی مہریں صحیح نہ ہونے کی شکایات کی،جی سیون فور یوسی30کے پولنگ سٹیشن وارڈ نمبر5 جہاں مسلم لیگ(ن)کے سابق سینیٹر ظفرعلی شاہ چےئرمین کے امیدوار تھے اور انکے مقابلے میں پی ٹی آئی کے عامر شیخ انتخاب لڑرہے تھے وہاں الیکشن کمیشن کی جانب سے امیدواروں کو فراہم کی جانیوالی رائے دہندگان کی فہرستوں اورعملے کو دی جانیوالی فہرستوں میں مماثلت نہیں تھی۔ایک فہرست میں صفحہ نمبر10اور11سرے سے موجود ہی نہیں تھے،بیلٹ پیپر میں سیریل نمبر میں بھی غلطیاں دیکھی گئیں۔اسلام آباد میں ہونیوالے بلدیاتی انتخابات میں650نشستوں پر2ہزار396امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوا جن کے انتخاب کیلئے6لاکھ سے زائد افراد نے اپناحق رائے دہی استعمال کیا۔ دوسری جانب بدانتظامی کی ایک مثال مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما اور سابق سینیٹر ظفر علی شاہ کی جانب سے شناختی کارڈ کے بغیر ہی اپنا ووٹ کاسٹ کرنا ہے۔ ۔مسلم لیگ (ن) کے رہنما ظفر علی شاہ اسلام آباد کے علاقے آبپارہ کے سیکٹر جی سیون یونین کونسل نمبر 30 سے چےئرمین کے امیدوار ہیں اور انھوں نے اپنا ووٹ بغیر شناختی کارڈ کے ہی اسلام آباد ماڈل اسکول اقبال ہال میں کاسٹ کیا جس پر تحریک انصاف کے رہنماؤں کی جانب سے شدید احتجاج بھی کیا گیا اور پولنگ کا عمل کچھ دیر کے لئے معطل بھی کرنا پڑا۔ظفر علی شاہ کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ میں نے اپنا اسمارٹ کارڈ دکھا کر ووٹ کاسٹ کیا ہے،تحریک انصاف الزامات لگانے کی بیماری ہے اور اس بھ بیماری کا ہمارے پاس کوئی علاج نہیں۔ جب کہ پریزائڈنگ افسر کا اس حوالے سے موقف ہے کہ چونکہ ظفر علی شاہ جانی پہچانی شخصیت ہیں اس لئے بغیر شناختی کارڈ ووٹ ڈالنے کی اجازت دی۔

مزید :

صفحہ اول -