نواز شریف سے ملاقات مودی کی خواہش پر ہوئی ،سفارتی ذرائع

نواز شریف سے ملاقات مودی کی خواہش پر ہوئی ،سفارتی ذرائع

  

پیرس (مانیٹرنگ ڈیسک).پیرس میں پاکستان اور بھارت کے وزرائے اعظم نواز شریف اور نریندر مودی ملے تو مصافحہ ہوا، مسکراہٹوں کا تبادلہ ہوا، بے تکلفی سے ایک صوفے پر بیٹھ کر گفتگو کی۔سفارتی ذرائع کہتے ہیں نریندر مودی ملاقات کے خواہش مند تھے اور انہوں نے بہتر تعلقات کی خواہش ظاہر کی۔ وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ پاکستان پْرامن ہمسائیگی چاہتا ہے۔پاکستان سے بہتر تعلقات کی اہمیت کا اندازہ لگانے میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو 6ماہ کا وقت لگ گیا۔کانفرنس کے دوران ایک وقفہ آیا تو بھارتی وزیراعظم مودی نے ہال وے کے کاریڈور میں وزیراعظم نواز شریف سے مصافحے کے لیے ہاتھ بڑھا دیا۔ مصافحے کے بعد دونوں رہ نما قریب ہی ایک صوفے پر بیٹھ گئے۔چند منٹوں کی اس غیررسمی بیٹھک میں جہاں نریندر مودی اپنا موقف پیش کرتے نظر آئے، تو وزیر اعظم نواز شریف نے بھی انتہائی پراعتماد انداز میں جواب دیا اور پاک بھارت تعلقات کو معمول پر لانے کے لیے پاکستان کا موقف واضح انداز میں مودی کے سامنے رکھا۔اب سفارتی ذرائع نے انکشاف کیا ہے اس غیر رسی ملاقات کی خواہاں خود بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی تھے، ایک ایسی ملاقات جس میں وہ دونوں ملکوں کے رشتوں کو بہتر بنانے کی خواہش کا اظہار کرسکیں۔سفارتی مبصرین کے مطابق پاکستان اور بھارت کے وزراء اعظم کی ملاقات پاک بھارت تعلقات پر گہرا اثر چھوڑے گی اور یہ ملاقات انتہائی اہمیت رکھتی ہے۔مبصرین کے مطابق بھارتی وزیراعظم نریندر مودی پر بھارت کے موجودہ حالات اور پاک بھارت تعلقات بہتر بنانے کے لئے دباؤ تھا جس کے بعد نوازشریف اور مودی کے درمیان یہ مختصر ملاقات سے پاک بھارت تعلقات میں اہم پیشرفت ہے۔

مزید :

صفحہ اول -