ضلع کونسل چارسدہ کا 44 کروڑ کا بجٹ متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا

ضلع کونسل چارسدہ کا 44 کروڑ کا بجٹ متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا

  

چارسدہ (بیورورپورٹ) ضلع کونسل چارسدہ نے 44کروڑ روپے کا بجٹ متفقہ طور پر منظور کر لیا ۔ اپو زیشن نے پہلے سیشن میں بجٹ مستر د کر کے اجلاس سے بائیکاٹ کر دیا۔ حکومتی بینچ عددی اکثریت نہ ہونے کی وجہ سے پہلے سیشن میں بجٹ پاس کرنے میں ناکام ۔سپیکر نے ایوان کا اجلاس 20منٹ کے لئے ملتوی کر کے اپو زیشن اور حکومتی بینچوں کو مذاکرات کے میز پر بٹھایاجس کے بعد بجٹ متفقہ طور پر منظور کیا گیا ۔ضلع ناظم کیلئے 11کروڑ روپے صوابدیدی فنڈ مختص۔ تفصیلات کے مطابق ضلع کونسل چارسدہ کا بجٹ اجلاس زیر صدارت سپیکر مصور شاہ منعقد ہو ا۔ تلاوت کلام پاک کے بعد سپیکر نے ضلع ناظم فہد ریاض کو بجٹ پیش کرنے کی اجاز ت دے دی جس پر اپو زیشن لیڈر قاسم علی خان محمد زئی نے کھڑے ہو کر ایوان سے بیشتر سرکاری اداروں کے سربراہان کی عدم موجودگی پر شدید احتجاج کیا اور کہا کہ نئے بلدیاتی نظام کے تحت تمام سرکاری ادارے ایوان کے ماتحت کام کرنے کے پابند ہیں ۔اپو زیشن رہنماء کے اس پوائنٹ کا ڈپٹی کمشنر طاہر ظفر عباسی نے نوٹس لیا اور ایوان سے غیر حاضر افسران کے حوالے سے ضروری پوائنٹ نوٹ کئے۔ ضلع ناظم فہد ریاض خان نے بجٹ پیش کیا تو اپو زیشن نے بجٹ پر تحفظات کا اظہار کر تے ہوئے ایوان سے واک آوٹ کیا جس پر سپیکر نے اجلاس 20منٹ کیلئے ملتوی کیا ۔ وقفے کے دوران ڈپٹی کمشنر نے اپو زیشن رہنماؤں اور ضلع ناظم کو مذاکرات کے میز پر بٹھا کر ایوان کے تقدس اور بھائی چارہ قائم کرنے پر زور دیا ۔ ضلع ناظم کے ساتھ کامیاب مذاکرات کے بعد اپو زیشن نے واک آوٹ ختم کرکے 44کروڑ روپے کا بجٹ متفقہ طور پر منظو ر کیا جس میں تعلیم اور مواصلات کیلئے 1752 ملین، صحت اور سنیٹیشن کے لئے 876ملین ، زراعت ، خواتین کی ترقی اور کھیلوں کیلئے 657ملین جبکہ ضلعی حکومت کی صوابدیدی فنڈ کیلئے 110ملین روپے شامل ہیں ۔ اجلا س میں براہ راست منتخب ممبران کیلئے .55.55لاکھ جبکہ محصوص نشستوں پر منتخب ممبران کیلئے 20.20لاکھ روپے کا ترقیاتی فنڈ منظور کیا گیا ۔ یاد رہے کہ ایوان کے سپیکر حاجی مصور خان بھی اپو زیشن کو منانے میں کافی سر گرم رہے جس پر بعض ممبران نے اعتراض کیا ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -