روس کی جانب سے شام میں ایسے خطرناک ہتھیار کا استعمال کہ دنیا میں کھلبلی مچ گئی، سنگین ترین الزام لگ گیا

روس کی جانب سے شام میں ایسے خطرناک ہتھیار کا استعمال کہ دنیا میں کھلبلی مچ ...
روس کی جانب سے شام میں ایسے خطرناک ہتھیار کا استعمال کہ دنیا میں کھلبلی مچ گئی، سنگین ترین الزام لگ گیا

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) جنگی طیارہ گرانے پر روس کو ترکی پر غصہ تو تھا مگر عالمی میڈیا کی رپورٹس سے لگتا ہے کہ روس نے اپنا وہ غصہ داعش کے زیرقبضہ شامی علاقے کے عام شہریوں پر اتارنا شروع کر دیا ہے۔ برطانوی اخبار”ڈیلی میل“ کی رپورٹ کے مطابق روس کے شامی شہر رقہ میں روس نے فاسفورس بموں کی برسات کر دی ہے جس سے داعش کے شدت پسندوں سے زیادہ عام شہری ہلاک ہوئے ہیں۔ برطانوی اخبار کے مطابق کئی میڈیا رپورٹس سے شواہد مل رہے ہیں کہ روس داعش کی موجودگی والے علاقوں میں سفید فارسفورس بم پھینک رہا ہے جو جنیوا کنونشن میں منع کیے گئے ہیں اور ان کا پھینکنا جنگی جرم کے زمرے میں آتا ہے، کیونکہ یہ بم انسانی گوشت اور ہڈیوں تک کو جلا کر بھسم کر دیتے ہیں اور املاک کو جلا کر راکھ کر دیتے ہیں۔وائٹ فاسفورس کے بموں کو ڈبلیوپی بھی کہا جاتا ہے اور یہ رات کے وقت اندھیرے یا دن میں دھند کے باعث ٹارگٹ دکھائی نہ دینے والے موسم میں استعمال کیے جاتے ہیں۔

مزید جانئے: ’بس اب بہت ہوگیا۔۔۔‘ روس کے بعد امریکہ نے بھی ترکی پر سنگین ترین الزام لگادیا، بڑا مطالبہ کردیا

انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے فلاحی کارکنوں کی طرف سے رقہ پر کی گئی روسی فاسفورس بمباری کی تصاویر سوشل میڈیا، بالخصوص ٹوئٹر پر شیئر کی جا رہی ہیں۔ ان تصاویر میں آسمان سے بموں کی برسات ہوتے دکھائی گئی ہے۔انسانی حقوق کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ رقہ داعش کا گڑھ ہے مگر زمین پر موجود لوگوں کا کہنا ہے کہ اس بمباری سے زیادہ تر عام شہری متاثر ہوئے ہیں۔ٹوئٹر صارفین فاسفورس بمباری کرنے پر روس کو کڑی تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ ایک عراقی ٹوئٹر صارف نے ٹویٹ کیا کہ بشارالاسد کو بچانے کے لیے روس شام کے معصوم شہریوں پر بمباری کرکے جنگی جرائم کا مرتکب ہو رہا ہے۔شام کے شہر ادلیب کے ایک کارکن کا کہنا تھا کہ ”ہم جانتے ہیں کہ یہ فاسفورس بم برسائے گئے کیونکہ بمباری سے پورا آسمان ایک بار روشن ہو گیا اور جب یہ بم زمین پر پہنچے تو ہر طرف آگ بھڑک اٹھی تھی۔“ایک عراقی خاتون ٹوئٹر صارف نے بمباری کی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ”کیا تم جانتے ہو کہ روس رقہ پر بمباری میں فاسفورس بم استعمال کر رہا ہے اور یہ جنگی جرم ہے۔“

مزید :

بین الاقوامی -