پنجاب اسمبلی :کارروائی میں ارکان کی عدم دلچسپی

پنجاب اسمبلی :کارروائی میں ارکان کی عدم دلچسپی

ان دنوں پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں کورم نہ ہونے کی وجہ سے اسمبلی کارروائی برائے نام ہو رہی ہے۔ حکومتی پارٹی کو بہت بھاری اکثریت حاصل ہونے کے باوجود اراکین کی طرف سے عدم دلچسپی کا اظہار ہو رہا ہے جبکہ اپوزیشن ارکان بھی زیادہ دلچسپی نہیں لے رہے ہیں۔ منگل کے روزاسمبلی میں گھنٹیاں بجانے کے باوجود کورم پورا نہ ہونے پر سپیکر رانا محمد اقبال نے اجلاس کی کارروائی اگلے روزتک ملتوی کردی۔ اجلاس صرف پندرہ منٹ تک جاری رہ سکا۔ یہ صورت حال سب سے بڑے صوبے کی اسمبلی کے حوالے سے یقیناًافسوسناک ہے۔پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر محمود الرشید اور دیگر رہنماؤں کی رائے ہے کہ وزیر اعلیٰ شہباز شریف اسمبلی اجلاس میں بہت کم آتے ہیں اس لئے کورم کا مسئلہ درپیش رہتا ہے۔ اس کے جواب میں سپیکر پنجاب اسمبلی اور بعض وزرأ یہ موقف اختیار کرتے ہیں کہ اپوزیشن ممبران بھی بہت کم تعداد میں موجود ہوتے ہیں، جس کی وجہ سے کورم ٹوٹتا رہتا ہے۔ (منگل کو یہی صورتحال تھی )کورم کا پورا نہ ہونا خاصا سنجیدہ مسئلہ ہے۔ عوامی خدمت کے دعویداروں کا یہ رویہ خود اراکین اسمبلی کو دعوتِ فکر دیتا ہے۔ یہ شکایت عام ہے کہ بہت سے ارکان رجسٹر پر حاضری لگا کر اسمبلی سے چلے جاتے ہیں۔ کئی ارکان لابی میں بیٹھ کر گپیں لگاتے رہتے ہیں۔جہاں تک وزیر اعلیٰ شہباز شریف کی اسمبلی میں حاضری کی بات ہے تو انہیں خود ہی ایسا بندوبست کرنا چاہیے کہ وہ دوسرے تیسرے دن اجلاس میں شرکت ضرور کیا کریں۔ وزیر اعلیٰ کے معاونِ خصوصی رانا محمد ارشد نے بتایا ہے کہ پارلیمانی سیکرٹریوں پر واضح کر دیا گیا ہے کہ جو بھی پارلیمانی سیکرٹری مسلسل تین روز تک ایوان کی کارروائی میں شرکت نہیں کرے گا، اس سے پارلیمانی سیکرٹری کا عہدہ واپس لے لیا جائے گا۔ ممکن ہے، اس وارننگ پر عمل بھی ہو، لیکن ارکان اسمبلی کو ایوان میں موجودرہنا چاہئے۔

مزید : اداریہ