سرتاج عزیز ہارٹ آف ایشیاء کانفرنس میں شرکت کیلئے 4دسمبر کو بھارت جائیں گے

سرتاج عزیز ہارٹ آف ایشیاء کانفرنس میں شرکت کیلئے 4دسمبر کو بھارت جائیں گے

اسلام آباد(آن لائن)مشیرخارجہ سرتاج عزیز 4دسمبر کو بھارت جائیں گے ،بھارتی میڈیا کے مطابق مشیر خارجہ بھارت کے شہرامرتسر میں ہونے والی ہارٹ آف ایشیا کانفرنس میں شرکت کر نے کیلئے چار دسمبر کو واہگہ بارڈر کے راستے بھارت جائیں گے،وہ کانفرنس میں شرکت کے بعد چار دسمبر کو ہی واپس وطن پہنچ جائیں گے ۔ مشرقی پنجاب کے شہر امرتسر میں 3اور 4دسمبر کو ہونے والی ہارٹ آف ایشیا کانفرنس میں پاکستان سمیت 40ممالک کے نمائندے شرکت کر رہے ہیں اس سے قبل یہ کانفرنس اسلام آباد میں منعقد ہوئی تھی اور اس میں بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے شرکت کی تھی کانفرنس کا بنیادی مقصد افغانستان میں امن و امان اور تعمیر نو کے امور پر غوروخوض کرنا اور موثر اقدامات شامل ہیں، افغانستان کے صدر ڈاکٹر اشرف غنی بھی کانفرنس سے خطاب کریں گے۔دوسری جانب تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اگرچہ حکومت نے کانفرنس میں شرکت کا فیصلہ کیا ہے تاہم اپوزیشن کے بعض حلقوں کا موقف ہے کہ پاکستان اور بھارت کی موجودہ کشیدہ صورتحال میں پاکستان کو مذکورہ کانفرنس میں شرکت سے گریز کرنا چاہیے ہماری رائے میں کانفرنس میں شرکت پاکستان کے مفاد میں ہے اور اسے کسی صورت اس سے باہر نہیں رہنا چاہیے افغانستان ہمارا برادر پڑوسی ملک ہے اور ہمارا ہمیشہ سے ہی یہ موقف رہا ہے کہ افغانستان میں امن ہماری خارجہ پالیسی میں بنیادی اہمیت رکھتا ہے چونکہ دونوں ملک ایک دوسرے کے حالات سے متاثر ہوتے ہیں اس لئے بھی افغانستان کا امن پاکستان کے لئے ضروری ہے، یہ بھی حقیقت ہے کہ اس سے قبل پاکستان نے افغان طالبان اور افغان حکومت کے درمیان مذاکرات کے لئے متعدد کوششیں کی ہیں اور وہ بار آور بھی ثابت ہوئی ہیں تاہم بعدازاں امریکہ کی ایک کارروائی کے نتیجے میں افغان طالبان کے امیر ملا اختر منصور کی ہلاکت کے بعد رابطوں کی صورتحال پر منفی اثرات مرتب ہوئے اس پس منظر میں پاکستان کے لئے اس کانفرنس سے باہر رہنے کا کوئی جواز نہیں ہے اگر یہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کہ پاک بھارت کشیدگی کے موجودہ حالات نے پاکستان کی اس کانفرنس میں شرکت کو ضروری قرار دے دیا ہے ا

مزید : صفحہ اول