رحیم یار خان کی121یونین کونسلوں میں کرپشن اور بدانتظامی عروج پر

رحیم یار خان کی121یونین کونسلوں میں کرپشن اور بدانتظامی عروج پر

رحیم یارخان(ڈسٹرکٹ رپورٹر)ضلع رحیم یار خان کی121یونین کونسلوں میں سیکرٹریوں کااختیارات سے تجاوز‘ کرپشن ومالی بدعنوانیاں اور بد انتظامی عروج پرجاری ہے ‘منظورنظرسیکرٹریوں کے ذریعے ماہانہ بھتہ وصول کیاجاتاہے‘تقرروتبادلے اورشکایت پر کارروائیو ں کی آڑ میں باقاعدہ نرخ مقرر ہیں‘ سیکرٹریوں کو ایڈیشنل چارج دینے کی اپنے حکم کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے خاص کار سیکرٹریوں (بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

کو دوسری یونین کونسلوں کا ایڈیشنل چارج دے رکھا ہے‘ دیہی علاقوں میں سات سال سے لیٹ اندراج کے بغیر منظوری سرٹیفکیٹس جاری کرکے مال کمایا جاتا ہے‘ ان کا ریکارڈ چیک کیا جاسکتا ہے زیادہ تر سیکرٹری اور عملہ ڈیوٹی پر نہیں جاتا‘ پرائیویٹ دکانداروں سے کاروبار شروع کرارکھا ہے۔ ضلع بھر میں برتھ‘ ڈیتھ‘ لیٹ اندراج اور کمپیوٹرائزڈ نکاح نامہ کے ضرورت مندوں سے منہ مانگے نذرانے لئے جاتے ہیں۔ کئی سیکرٹری انتہائی بوگس سرٹیفکیٹ بنانے کے ماسٹر بتائے جاتے ہیں جن کے بارے میں نادرا نے وارننگ بھی دے دی ہے۔ اس کے باوجود جائز وناجائز اندراج کیلئے بدنام زمانہ سیکرٹری بدستور کام کررہے ہیں۔ ذرائع کے مطابق کئی یونین کونسلوں میں ایک ایک سیکرٹری کی اجارہ داری ہے اور بھتہ نہ دینے والوں کو ایک یونین کونسل میں دو دو‘ تین تین سیکرٹری لگارکھے ہیں‘ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ بہاولپور کے دورے پر سیکرٹریوں اور عملہ سے اضافی مال وصول کیا جاتا ہے۔رابطہ کرنے پرڈسٹرکٹ کمیونٹی آرگنائزیشن ذرائع نے بتایاکہ واقعہ کی انکوائری کی جائے گی ۔

یونین کونسل کرپشن

مزید : ملتان صفحہ آخر