آسیان کے مابین تجارت کل ٹریڈ کا صرف25فیصد ہے،ریکٹر نسٹ نویدزمان

آسیان کے مابین تجارت کل ٹریڈ کا صرف25فیصد ہے،ریکٹر نسٹ نویدزمان

اسلام آباد(پ ر) نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی(نسٹ) اور ڈنمارک کے رائل ڈیفنس کالج کے اشتراک سے امن،ترقی اور خود مختاری کیلئے علاقائی روابط کی ترقی پر بدھ کے روزدو روزہ سیمینار کا افتتاح ہوا۔افتتاحی خطاب میں ریکٹر نسٹ لیفٹیننٹ جنرل (ریٹائیرڈ)نوید زمان نے نسٹ اور ڈنماک رائل ڈیفنس کالج کے اشتراک پرسیمینارمنعقد کرنے کو سراہا۔ریکٹر نسٹ نے کہا کہ جنوب مشرقی ایشیائی ممالک کی تنظیم آسیان کے مابین تجارت کل آسایاں تجارت کا تقریبا پچیس فیصد ہے جبکہ جنوبی ایشیا میں باہمی تجارت صرف پانچ فیصد ہے جوعلاقائی روابط کی صورت حال تسلی بخش نہ ہونے کو ظاہر کرتا ہے۔ انہوں نے جنوبی ایشیا میں نا قص رابطوں کی متعدد وجوہات کا حوالہ دیا جیسا کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان عدم اعتبارجس کی بڑی وجہ بھارتی غیر لچکداری،تشدد، غربت، دہشت گردی ، مسئلہ کشمیر کو حل نہ کرنا، افغانستان میں طویل انتشار وبد امنی اور ایران کی تنہائی، خطے میں تیزی سے شہری آبادی میں اضافہ ہیں۔ انہوں نے کہا خطے میں جانے پہچانے ذرائع کو استعمال کرتے ہوئے روابط کو تیز تر بنانے کاموقع ملے گاجیسا کہ ٹیرف میں کمی اور نان ٹیرف رکاوٹیں ،پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ، کاروباری افراد کے مابین روابط شامل ہیں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے معزز مہمان سابق چیئر مین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی، جنرل (ریٹائیرڈ)احسان الحق نے کہا، چین پاکستان، بھارت، ایران، افغانستان، وسط ایشیائی ریاستیں اور دیگر جنوبی ایشیائی ممالک کی کل آبادی تقریبا 3.5بلین ہے جو دنیا کی کل آبادی کاپینتالیس فیصد سے زائد ہے۔اتنی بڑی آبادی کوگٹھ جوڑ اور اپنے مفاد کی غرض سے منفی سیاست کیلئے یرغمال نہیں بنایا جا سکتا ۔انہوں نے مزید کہا کہ علاقائی رابطوں کیلئے خطوں کے مابین رابطوں کو بڑھانا اور ایک خطہ ایک شاہراہ کا اقدام ایک قابل تقلید مثال ہے ا ور پاک چین اقتصادی راہداری انہی دو اقسام کیلئے رابطہ کی کڑی ہے۔اس سے قبل ڈنمارک میں متعین ڈنمارک کے سفیرعزت مآب جناب اول تھونک نے عالمی علمی راہداری پر مبنی سیمینار منعقد کرنے کو نسٹ کا مثبت قدم قرار دیا۔انہوں8 نے عالمی امن کے قیام میں ڈنماک کے کردار پر روشنی ڈالی اور کہا کہ عالمی وسیع تناظر میں خطے میں باہمی ہم آہنگی پیدا کرنے میں ڈنمارک کے کردار پر روشنی ڈالی۔سیمینار میں سابق چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل(ریٹائیرڈ) احسان الحق، سری لنکا کے سابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل (ریٹائیرڈ) دایا رتنائیکے ،ریکٹر نسٹ لیفٹیننٹ جنرل(ریٹائیرڈ)نوید زمان ،سابق گورنر بلوچستان و خیبر پختونخواہ جناب اویس غنی، سابق سیکرٹری خارجہ پاکستان جناب ریاض کھوکھر، صدر امارات پالیسی سنٹر ڈاکٹر ابتسام الکتبی ، پاکستان میں تعینات ڈنماک سفیر عزت مآب جناب اولی تھنک، افغان رکن پارلیمنٹ جناب میر واعظ یسینی ،جناب سید مہدی منادی افغان وزارت خارجہُ امور، مشیر اعلٰی افغان وزارت تعلیم جناب عطااللہ وحیدیارا ور دیگرنے بھی سیمینار میں شرکت کی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...