انجینئر نگ یونیورسٹی کے جونیئر کلرک کے ورثاء کو پیکج نہ دینے پر جواب طلب

انجینئر نگ یونیورسٹی کے جونیئر کلرک کے ورثاء کو پیکج نہ دینے پر جواب طلب

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس مظہر عالم میانخیل اور جسٹس ابراہیم خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے سول سیکرٹریٹ بس دھماکے میں شہید ہونے والے انجینئرنگ یونیورسٹی کے جونیئرکلرک کے ورثاء کو شہید پیکج ادا نہ کرنے پر صوبائی حکومت اوریونیورسٹی کے وائس چانسلرسے جواب مانگ لیاہے فاضل بنچ نے تیمورحیدر خان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائر ناظرہ بی بی کی رٹ کی سماعت کی اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ درخواست گذارہ کاشوہر محمد حامد جان تنگی کارہائشی تھا جو انجینئرنگ یونیورسٹی میں بطورجونیئرکلرک تعینات تھا 16 مارچ2016ء کو سرکاری ملازمین کو لے جانے والی بس دہشت گردی کاشکارہوئی اورسنہری مسجد کے قریب دھماکے سے تباہ ہونے کے بعداس میں درخواست گذارہ کے شوہرسمیت متعدد افراد جاں بحق ہوئے تاہم آٹھ ماہ گذرنے کے باوجود انہیں تاحال شہداء پیکج ادا نہیں کیاگیالہذادرخواست گذار کو شہید پیکج دینے کے احکامات جاری کئے جائیں فاضل بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعد صوبائی حکومت اوروی سی کونوٹس جاری کرکے جواب مانگ لیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر