چارسدہ میں تحصیل کونسل کا اجلاس ،امن وامان کی مخدوش صورتحال پر تنقید

چارسدہ میں تحصیل کونسل کا اجلاس ،امن وامان کی مخدوش صورتحال پر تنقید

چارسدہ (بیور و رپورٹ )امن و امان کی مخدوش صورتحال ، رہزنی ، ڈکیتی او ر دیگر جرائم کے خلاف عوامی نمائندگان برس پڑے ۔ تحصیل کونسل کے اجلاس میں تحصیل نائب ناظم کے زیر صدارت اجلاس میں تحصیل ناظم اور دیگر عوامی نمائندگان کا بجلی اور گیس لوڈ شیڈنگ سمیت زراعت و صحت کے مخدوش صورتحال پر بھی سخت تنقید ۔ ٹی ایم اے ہال میں تحصیل کونسل کا اجلاس زیر صدارت ڈاکٹر الطاف منعقد ہوا۔ اجلاس میں تحصیل ناظم خلیل بشیر خان عمر زئی ، تحصیل کونسلرز شاکر خان ، پیر علی خان ، مولانا تحمید اللہ ، کرامت شاہ ، ایس ایچ او تھانہ سٹی اولایت خان ا ور سرکاری عہدیدارن نے بھی شر کت کی ۔ اجلاس میں اظہار خیال کر تے ہوئے ناظم خلیل بشیر خان عمر زئی ، تحریک انصاف کے شاکرخان ، پیر علی خان ، قومی وطن پارٹی کے کرامت شاہ ، جمعیت علمائے اسلام کے مولانا تحمید اللہ ،اعظم جان باچہ ،اور دیگر نے واپڈ ، سوئی ، اور محکمہ صحت سمیت امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر شدید تنقید کی ۔ ممبران نے اپنے تقاریر میں کہا کہ محکمہ سوئی گیس کی طرف سے گیس بند ش او ر محکمہ واپڈا کی طرف سے ناروا غیر اعلانیہ اور طویل بجلی لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کی زندگی اجیرن کر دی ہے ۔ معزز ممبران تحصیل کونسل نے وزارت پانی و بجلی اور سوئی گیس حکام سے مطالبہ کیا کہ ہر دو وزراء چارسدہ میں جاری چوپٹ رات اور اندھیر نگری سے عوام کو نجات دلائے۔ کونسل کے اجلاس سے بعض ممبران نے خطاب کے دوران محکمہ زراعت کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ گند م کے ناقص بیج سے کسانوں کو مالی نقصانات کا سامنا کرنا پڑا ہے جو محکمہ ہذا کے ساتھ حکومتی کارکر دگی کی قلعی کھول رہی ہے جس سے زراعت پیشہ شہری مالی بحران کے شکار ہو گئے ہیں جبکہ پیداوار پر منفی اثر پڑنے سے اناج کے قیمتوں میں بے تحاشا اضافہ ہو اہے۔اجلا س میں امن و امان کی صورتحال بارے اظہار خیال کر تے ہوئے ممبران نے کہاکہ پولیس کا رویہ انتہائی جارحانہ اور ناقابل قبول ہے ۔ ہوائی فائرنگ کے سلسلے میں سخت اقدامات کی ضروت ہے لیکن ہوائی فائرنگ کے آڑ میں بے گناہ شہریوں کو بے جا تنگ کرنا انتہائی افسوسنا ک ہے ۔ پیر علی شاہ نے کہا کہ ان کے ساتھ انٹر چینج پر ناکہ بندی پر پولیس کنسٹیبل نے بد تمزی کی جس پر انہوں نے ڈی ایس پی چارسدہ نذیر خان کو بذریعہ فون شکایت کی انہوں نے ان کی شکایت کا بر مانا جس پر انہوں نے ایوان سے واک آوٹ بھی کیا اور موقف اختیار کیا کہ جب تک ڈی ایس پی معافی نہیں مانگتا وہ ایوان میں واپس نہیں آئیگا۔ خلیل بشیر خان عمر زئی نے اپنے تقریر میں پیر علی خان کے ساتھ ہونے والے واقعہ کی شدید مذمت کی اور کہا کہ اس سلسلے میں وہ ڈی پی او چارسدہ سے جلد از جلد ملا قات کرینگے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم معزز ممبران اور عوامی نمائندگان عزت کیلئے ہر حد تک جائینگے ۔ انہوں نے کہاکہ آئندہ اجلاس میں ڈی ایس پی ، اسسٹنٹ کمشنر اور دیگر محکمہ جات کے افسران کی شرکت بھی یقینی بنائی جائے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر