سعودی مفتی نے لڑکیوں کی ایک ایسے شعبے میں تعلیم سے متعلق فتویٰ جاری کردیا کہ ہنگامہ برپا ہوگیا

سعودی مفتی نے لڑکیوں کی ایک ایسے شعبے میں تعلیم سے متعلق فتویٰ جاری کردیا کہ ...
سعودی مفتی نے لڑکیوں کی ایک ایسے شعبے میں تعلیم سے متعلق فتویٰ جاری کردیا کہ ہنگامہ برپا ہوگیا

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) لڑکیوں کی تعلیم ہمیشہ سے ہی مختلف معاشروں میں زیربحث رہی ہے لیکن اب کی بارایک سعودی مفتی نے ایسا فتویٰ جاری کردیا کہ ہنگامہ برپاہوگیا۔

العربیہ کے مطابق سعودی کے سرکردہ مبلغ سعید بن فروہ نے بیٹیوں کو میڈیکل کی تعلیم دلوانے والے والدین کو بر بھلاکہتے ہوئے کہاکہ بیٹیوں کو طب کی تعلیم دلوانے والے والد ’حقیقی مرد‘ نہیں، سعید بن فروہ کے مطابق ایسا کرنے والے والدین مرد وزن کے اختلاط کا سبب بن رہے ہیں۔

سعودی شہزادے نے خواتین کی ڈرائیونگ پر عائد پابندی ختم کرنے کا مطالبہ کردیا

سعید بن فروہ کے خیالات پر مبنی ویڈیو کی سوشل میڈیا پر غیر معمولی تشہیر سے دنیا بھر میں شدید ردعمل دیکھنے میں آیا اورسعودی عرب کے مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز الشیخ نے اس مفتی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور اپنے ہفتہ وار انٹرویو میں کہ فروا کا بیان اور خیالات انتہائی’خطرناک‘ ہیں اور یہ بیان قابل قبول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ طب کی تعلیم دینے والی ہماری جامعات محفوظ ہیں جہاں مرد وخواتین طالبات الگ الگ تعلیم حاصل کرتے ہیں،ہر جنس کے طلبہ دو مختلف لیکچر ہالز میں تعلیم پاتے ہیں۔

لڑکیوں کی تعلیم اور والدین کوطیش دلانے پر سعودی عرب میں سعید بن فروا کو امام مسجد اور مبلغ کے عہدے سے الگ کرنے کا مطالبہ شدت پکڑ رہا ہے۔

مزید : عرب دنیا

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...