’جہاز گرنے سے پہلے میں اس پوزیشن میں بیٹھ گیا اس لئے بچ گیا، باقی مسافر گھبراہٹ میں یہ بھول گئے اور مارے گئے‘ برازیلین طیارہ حادثے میں بچ جانے والے فضائی میزبان نے ایسی بات کہہ دی جو ہوائی جہاز کا سفر کرنے والے ہر شخص کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

’جہاز گرنے سے پہلے میں اس پوزیشن میں بیٹھ گیا اس لئے بچ گیا، باقی مسافر ...
’جہاز گرنے سے پہلے میں اس پوزیشن میں بیٹھ گیا اس لئے بچ گیا، باقی مسافر گھبراہٹ میں یہ بھول گئے اور مارے گئے‘ برازیلین طیارہ حادثے میں بچ جانے والے فضائی میزبان نے ایسی بات کہہ دی جو ہوائی جہاز کا سفر کرنے والے ہر شخص کو ضرور معلوم ہونی چاہیے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

بوگوٹا(مانیٹرنگ ڈیسک) جنوبی امریکہ کے ملک کولمبیا میں گزشتہ دنوں برازیلی فٹ بال ٹیم کا طیارہ گر کر تباہ ہو گیا جس میں کھلاڑیوں، صحافیوں اور عملے کے اراکین سمیت71افراد جاں بحق ہوئے۔ اس حادثے میں زندہ بچ جانے والوں میں عملے کے دو ارکان بھی شامل تھے۔ انہوں نے اپنے محفوظ رہنے کی وجہ بیان کی ہے جو ایسی کسی بدقسمتی کی صورت میں ہم سب کے کام بھی آ سکتی ہے۔ دی سن کی رپورٹ کے مطابق عملے کے رکن ایروین ٹیومیری نے فوکس سپورٹس ارجنٹینا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ”ہم اس لیے محفوظ رہے کہ ہم نے حفاظتی ہدایات پر عمل کیا تھا۔ جب طیارہ زمین کی طرف گرنا شروع ہوا تو میں نے بیگز کو اپنی ٹانگوں کے درمیان لے لیا اور اپنے جسم کو فیٹس(ماں کے پیٹ میں موجود بچہ) کی شکل میں موڑ لیاتھا۔ فضائی حادثے کی صورت میں اپنے جسم کو اس حالت میں موڑ لینے کی ہدایت کی جاتی ہے۔“ایروین نے دیگر مسافروں کے متعلق بتایا کہ ”جب جہاز گرنا شروع ہوا تو تمام مسافر اپنے سیٹوں پر کھڑے ہو گئے اور چیخنا شروع کر دیا۔

مسافر خاتون رن وے پر چلتے جہاز کا ایمرجنسی دروازہ کھول کر فرار ہوگئی اور پھر۔۔۔

حادثے میں محفوظ رہنے والی عملے کی ایک اور رکن ژی مینا سواریز کا کہنا تھا کہ ”جب طیارہ زمین کی طرف گرنے لگا تو اس کی تمام روشنیاں بجھ گئیں۔ اس کے بعد مجھے کچھ یاد نہیں۔“دی سن نے رپورٹ میں مزید کئی احتیاطی تدابیر بھی بیان کی ہیں جو فضائی حادثے کی صورت میں جان بچانے میں معاون ثابت ہو سکتی ہیں۔ ان ہدایات کے مطابق ہوائی سفر میں مسافروں کو ڈھیلا ڈھالا لباس نہیںپہننا چاہیے۔ قدرے ٹائٹ لباس اور بند جوتے پہننے چاہئیں تاکہ اگر طیارہ کسی سرد علاقے میں گرے تو یہ لباس اور جوتے آپ کو گرم رکھیں۔ کپڑے جتنے زیادہ ہوں گے وہ جہاز کی زمین سے ٹکر کے دوران مسافروں کو جلنے، خراشیں آنے اور زخمی ہونے سے محفوظ رکھیں گے اور وہ جہاز گرنے کے بعد باآسانی ملبے سے نکل سکے گا۔

اس کے علاوہ حادثے کی صورت میں اپنی سیٹ پر جم کر بیٹھ جائیں اور بیلٹ باندھ لیں۔ سیٹ میں محفوظ ہونے سے زمین پر گرنے کی صورت میں آدمی زیادہ زخمی نہیں ہو گا۔ ہمیشہ جہاز کے پچھلے حصے میں سیٹ لیجیے کیونکہ حادثے کی صورت میں پچھلے حصے میں بیٹھے مسافروں کے بچنے کے امکانات 40فیصد زیادہ ہوتے ہیں۔جہاز میں سوار ہونے کے بعد سیفٹی کارڈ دھیان سے پڑھیے اور عملے کی حفاظتی ہدایات غور سے سنیے۔ یہ ہدایات جان بچانے کے لیے مصدقہ ہیں۔ جہاز گرنے کی صورت میں اپنے آپ کو زمین پر ٹکرانے کے لیے تیار کریں۔ اگر آپ کے سامنے والی سیٹ بہت قریب ہے تو آگے جھک کر اپنے ہاتھ کی ہتھیلی اس پر رکھ دیں۔ اس کے بعد اس ہتھیلی پر دوسرے ہاتھ کی ہتھیلی اس طرح رکھیں کہ ”کراس“ کا نشان بن جائے اور پھر دونوں ہتھیلیوں کے اوپر اپنا ماتھا رکھ دیں اور جب جہاز گر جائے تو فوری طور پرملبے سے نکل کر دور جانے کی کوشش کریں۔ یہ احتیاطی تدابیر آپ کے محفوظ رہنے کے امکانات بڑھا دیں گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس