شہر میں شیر کی موجودگی کی اطلاع، پولیس نے سچ معلوم کرنے کیلئے رات کو جگہ جگہ کیمرے لگادئیے، لیکن یہ شیر نہیں تھا بلکہ۔۔۔

شہر میں شیر کی موجودگی کی اطلاع، پولیس نے سچ معلوم کرنے کیلئے رات کو جگہ جگہ ...
شہر میں شیر کی موجودگی کی اطلاع، پولیس نے سچ معلوم کرنے کیلئے رات کو جگہ جگہ کیمرے لگادئیے، لیکن یہ شیر نہیں تھا بلکہ۔۔۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نیویارک (نیوز ڈیسک) امریکی ریاست کینساس میں پہاڑی شیر کے آ نکلنے کی اطلاعات موصول ہونے کے بعد پولیس نے حقائق جاننے کا فیصلہ کیا۔ متعدد اطلاعات کے مطابق پہاڑی شیر کو رات کے وقت دیکھا گیا تھا اور لوگوں میں خوف و ہراس پایا جاتا تھا۔ پولیس نے خطرناک جانور کا سراغ لگانے کے لئے مقامی جنگل کے کچھ حصوں میں کیمرے لگادئیے ،لیکن جب ان میں ریکارڈ ہونے والی ویڈیو دیکھی گئی تو اس میں شیر کی بجائے ایسی پراسرار جنگلی حیات دیکھنے کو ملی کہ جس کا کبھی تصور بھی نہیں کیا گیا تھا۔

اخبار دی مرر کی رپورٹ کے مطابق پولیس نے جب جنگل میں لگائے گئے کیمروں کی ویڈیو دیکھی تو اس میں پہاڑی شیر تو کہیں نظر نہ آیا البتہ دیو قامت گوریلے، ایک سانتا کلاز اور سب سے منفرد چیز انسان نما بھیڑیانظر آیا۔ پولیس اہلکاروں کو جلد ہی اندازہ ہوگیا کہ قریبی علاقے کے شہریوں کو کیمرے لگائے جانے کا علم ہوگیا تھا لہٰذا انہوں نے صورتحال کو پرمزاح بنانے کے لئے عجیب و غریب قسم کے جانوروں کے کاسٹیوم پہن کر جنگل میں اودھم مچانا شروع کردیا۔

جنگل کی سیر کرکے واپس آنے والی خاتون نے گھر آکر اپنی تصاویر دیکھیں تو اُن میں چھپی ایسی چیز نظرآگئی کہ پیروں تلے زمین نکل گئی، بال بال بچ گئی کیونکہ۔۔۔

پولیس نے یہ دلچسپ ویڈیو انٹرنیٹ پر پوسٹ کردی ہے جس میں نظر آنے والی انتہائی مزاحیہ مخلوق کو جنگل میں گھومتے پھرتے دیکھا جاسکتا ہے۔ مقامی پولیس نے سوشل میڈیا پر پوسٹ کئے جانے والے بیان میں کہا ”ہم کچھ جنگلی جانوروں کو دیکھنے کی توقع کررہے تھے لیکن اس ویڈیو میں ایسی جنگلی حیات نظر آئی کہ جسے دیکھ کر ہمارے پیٹ میں ہنس ہنس کر بل پڑگئے۔ ہم ان تمام لوگوں کے شکر گزار ہیں جنہوں نے اس معاملے کو تفریح کا رنگ دے دیا اور سب کو خوش ہونے کا موقع فراہم کردیا۔“

جعلی پراسرار مخلوقات کی ویڈیو دیکھنے والے انٹرنیٹ صارفین بھی خوب محظوظ ہورہے ہیں اور ایسا دلچسپ کام کرنے والے افراد کو داد دے رہے ہیں۔ انٹرنیٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے ایک مقامی خاتون نے لکھا، ”مجھے امید ہے کہ پہاڑی شیر اگر اس علاقے میں موجود بھی تھا تو اب کبھی واپس نہیں آئے گا کیونکہ اس نے دیکھ لیا ہوگا کہ یہاں کیسے کیسے جانور پائے جاتے ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس