ڈاکٹر عمران فاروق کی اہلیہ کی طبیعت بگڑ گئی ، ہسپتال کے آئی سی یو منتقل ، ایم کیو ایم لندن کے منہ موڑنے پر بچے مقامی کونسل نے تحویل میں لے لیے

ڈاکٹر عمران فاروق کی اہلیہ کی طبیعت بگڑ گئی ، ہسپتال کے آئی سی یو منتقل ، ایم ...
ڈاکٹر عمران فاروق کی اہلیہ کی طبیعت بگڑ گئی ، ہسپتال کے آئی سی یو منتقل ، ایم کیو ایم لندن کے منہ موڑنے پر بچے مقامی کونسل نے تحویل میں لے لیے

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) ایم کیو ایم کے سابق رہنما ڈاکٹر عمران فاروق کی بیوہ شمائلہ عمران فاروق ان دنوں لندن کے ہسپتال کے انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں داخل ہیں جبکہ ایم کیو ایم لندن کی قیادت نے مظلوم خاندان سے مکمل طور پر منہ موڑ لیا جس کے بعد ان کے بچوں کو سماجی خدمت کے ادارے نے اپنی تحویل میں لے لیا ۔

ایم کیو ایم نے دھوکا دیا، بیٹے کو سیاست سے دور رکھنا،صولت مرزا کا اہلیہ کو خط

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل کے بعد سے ان کی بیوہ شمائلہ عمران مسلسل ذہنی و جسمانی بیماریوں کا شکار ہیں جبکہ وہ اکثر بے ہوش بھی ہو جاتی ہیں۔ شمائلہ عمران 10 دن پہلے بچوں کو سکول سے لینے گئیں تو بے ہوش ہو کر گر پڑیں جس کی وجہ سے ان کے دماغ اور گردن سمیت 3 جگہوں پر فریکچر ہوا۔

دیپیکا پاڈوکون نئی فلم ” پدماوتی “ میں جھومر ڈانس کیلئے 400 دیوں کی روشنی میں ناچیں گی

سکول میں بیہوش ہونے کے بعد شمائلہ عمران کو سنٹرل لندن کے ایک ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں انہیں تین دن ہسپتال میں رکھا گیا جس کے بعد فیصلہ کیا گیا کہ ان کا آپریشن کیا جائے گا۔ ڈاکٹرز نے بگڑتی حالت کے پیش نظر انہیں آئی سی یو میں منتقل کردیا ہے ۔ آئی سی یو میں انہیں 2 دفعہ سانس لینے میں بھی مشکل پیش آئی اور حالت قابو سے باہرجاتی محسوس ہوئی۔ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ شمائلہ عمران فاروق کو تین ہفتے تک ہسپتال میں ہی رکھا جائے گا۔

’تمہاری اس بات کا مطلب کیا ہے؟ صاف صاف جواب دو‘ طیب اردگان کی وہ بات جس نے روسی صدر پیوٹن کو غصے سے آگ بگولا کردیا، دوٹوک جواب مانگ لیا

دوسری جانب ڈاکٹر عمران فاروق کے 2 بچے ہیں جن میں سے ایک کی عمر 11 اور دوسرے کی 8 سال ہے۔ والدہ کے تین ہفتوں تک ہسپتال میں رہنے کے پیش نظر مقامی کونسل نے ایم کیو ایم لندن سے رابطہ کیا لیکن وہاں سے انہیں مثبت جواب نہیں ملا جس کے بعد انہیں کونسل نے اپنی فوسٹر کیئر میں رکھ لیا اور جب تک خاتون کا علاج مکمل نہیںہو جاتا بچے مقامی کونسل کے پاس ہی رہیں گے۔

مزید : قومی