عدالتی حکم پرمشتاق علی چیمہ کی جائیداد نیلامی کا اشتہار جاری

عدالتی حکم پرمشتاق علی چیمہ کی جائیداد نیلامی کا اشتہار جاری

لاہور ( نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے سابق وفاقی وزیر کی ایم ایس سی ٹیکسٹائل ملز کی جائیداد سات فروری کو نیلام کرنے کا حکم دے دیا، عدالتی حکم پر ڈیفالٹر مشتاق علی چیمہ کی جائیداد نیلامی کا اشتہار بھی جاری کر دیا گیا،مسٹر جسٹس شمس محمود مرزا نے یونائیٹڈ بنک لمیٹڈ کی درخواست پر سماعت کی، یو بی ایل کی طرف سے واصف مجید ایڈووکیٹ پیش ہوئے، بنک کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سابق وفاقی وزیر ٹیکسٹائل انڈسٹریز مشتاق علی چیمہ نے ایم ایس سی ٹیکسٹائل کیلئے قرض حاصل کیا اور اس کے لئے گارنٹی بھی دی، انہوں نے معاہدہ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ سابق وفاقی وزیر نے قرض کیلئے فیصل آباد میں واقع تین سو کنال پر مشتمل مختلف جائیدادیں بھی رہن رکھوائیں، قرض کی عدم ادائیگی پر ایم ایس سی ٹیکسٹائل ملز کو 2011ء میں ڈیفالٹر قرار دیا گیا، بنک کے وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ سابق وفاقی وزیر کی ڈیفالٹر ٹیکسٹائل ملز کے خلاف 2013ء سے 1 ارب 33 کروڑ 74 لاکھ 81 ہزار کی ڈگری بھی جاری ہو چکی ہے جبکہ عدالتی ڈگری کے بعد ڈیفالٹر نے 5 کروڑ 60 لاکھ روپے ادا کر دیئے ہیں اور نادہندہ ٹیکسٹائل ملز مالکان ڈگری کی بقایا رقم ادا نہیں کر رہے لہٰذا سابق وفاقی وزیر کی جائیدادیں نیلام کرنے کا حکم دیا جائے، ڈیفالٹر ایم ایس سی ٹیکسٹائل ملز کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ بنک کی اصل رقم ادا کی جا چکی ہے اور بنک نے غیر قانونی طور پر ریکوری کا دعوی دائر کیا ہے جبکہ ریکوری دعوی میں لگائی گئی اکاؤنٹ سٹیٹمنٹ میں حقائق موجود نہیں لہٰذا ایم ایس سی ٹیکسٹائل ملز کیخلاف ریکوری کا دعوی خارج کیا جائے، عدالت نے فریقین کے تفصیلی دلائل اور اعتراضات سننے کے بعد نے سابق وفاقی وزیر کی ایم ایس سی ٹیکسٹائل ملز کی جائیداد سات فروری کو نیلام کرنے کا حکم دے دیا، عدالتی حکم پر ڈیفالٹر مشتاق علی چیمہ کی جائیداد نیلامی کا اشتہار بھی جاری کر دیا گیا۔

جائیداد نیلامی

مزید : علاقائی