اگر پی ٹی آئی کو فارن فنڈنگ نہیں ہوئی تو تلاشی دیدے: دانیال عزیز

اگر پی ٹی آئی کو فارن فنڈنگ نہیں ہوئی تو تلاشی دیدے: دانیال عزیز

اسلام آباد (آئی این پی) وفاقی وزیر برائے نجکاری دانیال عزیز نے کہا ہے کہ اگر پی ٹی آئی کو فارن فنڈنگ نہیں ہوئی تو تلاشی دے دیں، خیبرپختونخوا میں بدعنوانی کی نشاندہی پر احتساب دفتر کو تالے لگوادیئے جاتے ہیں، عمران خان صاحب کہتے ہیں کہ جو ا کھیل کر اپنی جماعت چلائی،انہوں نے سپریم کورٹ میں بھی غلط بیانی کی،عوام میں نفرت اور بدظنی پھیلانا عمران خان کا وطیرہ بن چکا ہے،عمران خان ساڑھے تین سال تک توہین عدالت کے مرتکب رہے،شہباز شریف کے ہر جانے کے دعویٰ کیس میں عمران خان نے جواب نہیں دیا۔جمعرات کو پریس کانفرنس کرتے ہوئے دانیال عزیز نے کہا کہ پی ٹی آئی کا کیس تقریباً ہر عدالت میں چل ہا ہے، تحریک انصاف کی توہین میں لگی ہوئی ہے، تحریک انصاف کی قیادت کے قول و فعل میں واضح تضاد ہے، عمران خان ساڑھے تین سال تک توہین عدالت کے مرتکب رہے، شہباز شریف کے ہر جانے کے دعویٰ کیس میں عمران خان نے جواب نہیں دیا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان آج تک نجم سیٹھی کے کیس میں بھی پیش نہیں ہوئے، وہ مفرور ہیں، عمران پہلے تو پیش نہیں ہوئے پھر چپکے سے معافی مانگ لیتے ہیں، کے پی کے میں احتساب کمیشن کے چیئرمین چھوڑ کر چلے گئے ہیں، نیب کے چیئرمین کی تعیناتی کیلئے انہوں نے نام دیئے تھے انہی ناموں میں سے کسی کو کے پی کے میں احتساب کمیشن کا سربراہ لگا دیئے۔ دانیال عزیز نے کہا کہ عمران خان کا آئینی اداروں میں پیش نہ ہونا کیا ثابت کرتا ہے، اگر پی ٹی آئی کو فارن فنڈنگ نہیں ہوئی تو تلاشی دے دیں، تحریک انصاف دوسروں کو کہتی ہے کہ وہ تاخیری حربے استعمال کرتی ہے جبکہ وہ خود یہ کام کر رہے ہیں۔وزیر نجکاری نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں بدعنوانی کی نشاندہی پر احتساب دفتر کو تالے لگوادیئے جاتے ہیں،پی ٹی آئی نے فارن فنڈنگ کیس میں متعددبار حکم امتناع کی درخواست دی، فارن فنڈنگ میں کوئی ابہام نہیں تو حکم امتناع کیلئے تگ ودو کے کیا معنی ہیں ، عمران خان صاحب کہتے ہیں کہ جو ا کھیل کر اپنی جماعت چلائی،انہوں نے سپریم کورٹ میں بھی غلط بیانی کی،انہوں نے کہا کہ عمران خان نے بیرون ملک سے کروڑوں ڈالر غیر قانونی طریقے سے منگوائے ، عمران خان کو اپنے گربیان میں جھانکنا چاہیے، عمران خان قومی اسمبلی کے پورے بجٹ سیشن میں نہیں آئے، عوام میں نفرت اور بدظنی پھیلانا عمران خان کا وطیرہ بن چکا ہے۔

مزید : صفحہ آخر