شامی اپوزیشن کا روس سے شام کا بحران چھ ماہ میں حل کرنے پر زور

شامی اپوزیشن کا روس سے شام کا بحران چھ ماہ میں حل کرنے پر زور

دمشق(این این آئی)شامی اپوزیشن کے جنیوا مذاکرات میں شریک وفد کے سربراہ نصر الحریری نے روس اور دوسرے ملکوں پر زور دیا ہے کہ وہ دمشق پر حقیقی معنوں میں دباؤ ڈالیں تاکہ شام میں جاری بحران کے حل کے لیے اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں چھ ماہ کے اندر اندر کوئی حل نکالا جا سکے۔عرب ٹی وی کے مطابق ایک بیان میں نصر الحریری نے کہا کہ اپوزیشن کی طرف سے مذاکرات کے لیے کوئی پیش گی شرط پیش نہیں کی گئی مگر ہم سیاسی انتقال اقتدار کے لیے تفصیلی بات چیت کے خواہاں ہیں۔ ایسے مذاکرات جن میں صدر بشارالاسد کے سیاسی مستقبل کے بارے میں کوئی موثر فیصلہ کیا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں اپوزیشن کا شامی حکومت کے ساتھ دستور اور انتخابات کے موضوع پر براہ راست مذاکرات میں شریک ہونا ناممکن ہے۔قبل ازیں نصر الحریری نے کہا تھا کہ اقوام متحدہ کے امن ایلچی دی میستورا جنیوا مذاکرات 15 دسمبر تک جاری رکھنے کے خواہاں ہیں۔گزشتہ روز شامی حکومت کا ایک مذاکراتی وفد بات چیت کے لیے جنیوا پہنچا۔

تاہم مذاکرات کے نئے دور کے پہلے روز شامی حکومت کے وفد نے شرکت نہیں۔ منگل کے روز جنیوا مذاکرات کے 8 ویں دور میں شامی اپوزیشن کے نمائندوں اور اقوام متحدہ کے مندب کے درمیان ملاقات ہوئی تھی۔

مزید : عالمی منظر