تنخواہوں سے محروم خواتین اساتذہ کا پریس کلب پر احتجاج

تنخواہوں سے محروم خواتین اساتذہ کا پریس کلب پر احتجاج

کراچی(اسٹاف رپورٹر)تین سال سے تنخواہوں سے محروم این ٹی ایس پاس ٹیچرزنے جمعرات کو اپنے بچوں کے ہمراہ پریس کلب پر احتجاج کیاخواتین اساتذہ نے وزیراعظم اور صدرِ پاکستان سے مطالبہ کیا کہ ان کے خاندانوں کو معاشی بحران سے بچایا جائے۔تفصیلات کے مطابق جمعرات کو کراچی پریس کلب کے باہر این ٹی ایس پاس ٹیچرز نے تنخواہوں کے حصول کے لیے احتجاج کیا انہوں نے کہاکہ تقرری کے باوجودگزشتہ تین سال سے تنخواہوں سے محروم ہیں۔احتجاج کرتے ہوئے مظاہرین نے کہا کہ ابتدائی طور پر کچھ ماہ کی تنخواہ ادا کی گئی تھی جو اس بات کا ثبوت ہے کہ تقرریاں قوائد کے تحت ہوئی تھی۔ٹیچرزنے کہا کہ تقرریوں کو تین سال مکمل ہوچکے ہیں اور ہم ابھی تک تنخواہوں سے محروم ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ سابق صوبائی وزیرتعلیم پیر مظہر الحق کے دور میں بھرتی ہوئے۔خواتین اساتذہ نے یہ بھی کہا کہ این ٹی ایس ،انٹرویو اور میڈیکل ٹیسٹ پاس کرنے کے بعد ملازمتیں قوائد کے مطابق حاصل کی تھی صوبائی وزیر تعلیم جام مہتاب ڈہر کا موقف غلط ہے۔انہوں نے کہا کہ تنخواہیں نہ ملنے کے سبب شدید مالی بحران کا شکار ہیں وزیراعلی اور گورنر سندھ صورتحال پر توجہ دینے کو تیار نہیں لہذابراہ راست وزیر اعظم اور صدر پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ سینکڑوں خاندانوں کو معاشی مشکلات سے بچایا جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر