دالوں کی مجموعی پیداوار کا 80 فیصد پنجاب میں پیدا ہوتا ہے،زرعی ماہرین 

دالوں کی مجموعی پیداوار کا 80 فیصد پنجاب میں پیدا ہوتا ہے،زرعی ماہرین 

  



راولپنڈی (اے پی پی) زرعی ماہرین نے کہاہے کہ دالوں کی مجموعی ملکی پیداوار کا 80 فیصد پنجاب میں پیدا ہوتا ہے تاھم جڑی بوٹیاں دالوں کی پیداوار میں کمی کا باعث بنتی ہیں۔ماہرین نے کہاکہ  چنا اور مسور کی فصلوں کی منافع بخش کاشت میں جڑی بوٹیوں کا بروقت تدارک نہایت اہم ہے۔ ان جڑی بوٹیوں سے متاثرہ کھیتوں میں چنے اور مسور کی پیداوار میں نہ صرف کمی واقع ہوتی ہے بلکہ ان کی پیداوار غیر معیاری بھی ہوجاتی ہے۔ یہ جڑی بوٹیاں ان فصلوں کے حصے کے خوراکی اجزاء کھاد، پانی، روشنی اور جگہ کو حاصل کرکے فصل کو کمزور کردیتی ہیں۔ یہ جڑی بوٹیاں کیڑوں اور بیماریوں کے لئے متبادل میز بان پودوں کا کردار بھی ادا کرتی ہیں۔ 

چنے اور مسور کی فصل کو پہلے دو مہینوں تک جڑی بوٹیوں سے پاک رکھا جائے کیونکہ بعد میں اگنے والی جڑی بوٹیاں زیادہ نقصان کا باعث نہیں بنتیں۔ جڑی بوٹیوں کے موثر کنٹرول کے لئے چنے اور مسور کی فصل میں دو سے تین گوڈیاں کی جائیں۔ جڑی بوٹیوں کے کیمیائی تدارک کیلئے محکمہ زراعت (توسیع و پیسٹ وارننگ) کے مقامی فیلڈ عملہ سے مشورہ کرکے سپرے کریں۔ 

مزید : کامرس