جن سے ایک نوٹیفکیشن نہ بن سکا وہ آرمی چیف کی مدت میں متفقہ توسیع کیسے کرائینگے؟ بلاول

جن سے ایک نوٹیفکیشن نہ بن سکا وہ آرمی چیف کی مدت میں متفقہ توسیع کیسے ...

  



مظفرآباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوزایجنسیاں) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ حکومت سے ایک قانون پاس نہیں ہوا آرمی چیف کی متفقہ توسیع کیسے کرائے گی۔مظفرآباد میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آرمی چیف کی توسیع کا معاملہ پارلیمان میں آئے گا، دیکھنا یہ ہے کہ جن سے ایک نوٹیفکیشن نہیں بن سکا اور ایک سال میں ایک قانون پاس نہیں کرسکے، وہ 6 ماہ کے اندر اتنی اہم قانون سازی میں کیسے پارلیمنٹ میں اتفاق رائے پیدا کیں گے یا آئین میں ترمیم کریں گے۔بلاول نے کہا کہ اداروں کا کام کاروبار کرنا نہیں ہے، کب تک بڑے اداروں کو ٹیکس نیٹ سے باہر رکھا جائے گا، سب کو مل کر ترقی میں حصہ ڈالنا ہوگا اور کوئی مقدس گائے نہیں ہوسکتا،یہ حکومت امیروں کو ریلیف اور عوام پر بوجھ ڈال رہی ہے، یہ کیسا نیا پاکستان ہے جس میں کسانوں سے سبسڈی چھینی جارہی ہے اور اربوں پتی لوگوں کیلئے ایمنسٹی سکیم آتی ہے۔بلاول بھٹو زرداری نے مزید کہا کہ جب سے حکومت آئی ہے کوئی ایسا ادارہ نہیں جو زوال پذیر نہ ہو، اس حکومت سے جان چھڑانی ہوگی، سلیکٹرز کو سوچنا ہوگا کہ ملک مزید تجربوں کا متحمل نہیں ہوسکتا، سلیکٹڈ کو گھر بھیجنا پڑے گا۔دوسری طرف بلاول بھٹو اور وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان کے مابین اہم ملاقات‘ دورہ مظفرآباد کے دوران آزاد کشمیر کے وزیراعظم نے مقامی ہوٹل میں قیام پذیر پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے ساتھ ملاقات کی۔ اس موقع پر بات چیت کے دوران فاروق حیدر خان نے پیپلز پارٹی کے 52ویں یوم تاسیس کے موقع پر آزاد کشمیر کے دارلحکومت مظفرآباد میں یکجہتی و تاسیسی جلسہ عام کے انعقاد کو کشمیری عوام کیساتھ عملی یکجہتی کا ثبوت قرار دیتے ہوئے پیپلز پارٹی کی قیادت کا شکریہ ادا کیا اور واضح کیا کہ پیپلز پارٹی کی جانب سے کشمیری عوام کے ساتھ مشکل کی اس گھڑی میں یکجہتی کا مظاہرہ دور رس اثرات کا حامل ثابت ہوگا۔ علاوہ ازیں پارٹی کے یوم تاسیس پر اپنے پیغام میں کہا کہ دستور پسندی، قانون کی بالادستی، جمہوریت اور مساوات کے متعلق پارٹی کے بنیادی نظریات پر کاربند رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی پی پی کشمیریوں کی جدجہد برائے حقِ خود ارادیت کی بھرپور حمایت کرتی رہے گی، پارٹی کارکنان ہماری شہید قیادت کے مشن کی تکمیل تک سکھ کا سانس نہیں لیں گے۔

بلاول بھٹو

مزید : صفحہ اول