آرمی چیف مدت ملازمت معاملہ پر امید ہے اپوزیشن ذمہ داری کا ثبوت دے گی: شاہ محمود

  آرمی چیف مدت ملازمت معاملہ پر امید ہے اپوزیشن ذمہ داری کا ثبوت دے گی: شاہ ...

  



ملتان (این این آئی) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاکہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع آئین میں رہتے ہوئے کی گئی، وزیراعظم عمران خان آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں تین سال کی توسیع چاہتے ہیں لیکن پارلیمنٹ میں قانون سازی کے بعد صورتحال واضح ہو جائیگی، قانون سازی صرف حکومت کا مسئلہ نہیں ہے، امید ہے اپوزیشن جماعتیں ذمہ داری کا ثبوت دیتے ہوئے آرمی چیف کے معاملے میں قانونی سقم کو دور کرنے کیلئے حکومت کے ساتھ بھرپور تعاون کریں گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ بھارت سے مسائل اور خطے کی صورتحال سب کے سامنے ہے، ہندوستان کبھی بھی ایڈونچر کرسکتا ہے لیکن ہماری مسلح افواج ہر وقت تیار ہیں۔انہوں نے کہا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا موجودہ صورتحال میں اہم کردار ہے، آرمی چیف کے معاملے پر عدالتی فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے، عدالتی فیصلے کے مطابق قانون سازی کی جائیگی۔انہوں نے کہا کہ اسلامی ممالک کی تنظیم (او آئی سی) ہیومن رائٹس کمیشن نے کشمیر کی صورتحال پر جائزہ پیش کیا ہے،او آئی سی نے پاکستان کے موقف کی من وعن تائید کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں کرفیو کو اور کالے قوانین کے نفاذ کو 117 دن ہوگئے ہیں،مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں جاری ہیں۔انہوں نے کہاکہ بابری مسجد پر بھارتی عدالتی فیصلے پر ہمیں تشویش ہے، بابری مسجد کے فیصلے پر او آئی سی نے پاکستان کی تشویش کی تائید کی ہے، او آئی سی پر تنقید ہوتی تھی کہ ادارہ اپنا کردار ادا نہیں کررہا ہے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ براعظم افریقہ کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے پاکستانی سفارتکاروں کی کانفرنس کا انعقاد کیا، افریقہ کے 54 ممالک کی آبادی 1.2 ارب ہے،کانفرنس سے افریقی ممالک سے تعلقات میں بہتری آئیگی،پاکستان بامقصد افریقہ پالیسی بنارہا ہے، جلدی نیروبی میں اجلاس بلائیں گے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ جمعیت علمائے اسلام کے دھرنے کے باعث کشمیر سے توجہ ہٹ گئی، میڈیا سے درخواست ہے کشمیر سے نظر مت ہٹائے، کشمیری آج بھی پاکستان کی طرف دیکھ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایئر چیف سے ملاقات ہوئی ہے اور جنوبی پنجاب میں ائیر یونیورسٹی کے قیام سے متعلق گفتگو کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ائیر یونیورسٹی میں 8 ہزار طلبہ تعلیم حاصل کریں گے اور خطہ ترقی کرے گا۔ایک سوال پر انہوں نے کہاکہ سی پیک سے ہمارے حریف خائف ہیں، سی پیک حکومت پاکستان کی ترجیح ہے، قوم کو یقین دلاتا ہوں سی پیک پاکستان کے مستقبل کیلئے گیم چینجر ہے۔انہوں نے کہاکہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے حوالے موجودہ حکومت نے گزشتہ 10 سال سے زیادہ کام کیا ہے، پاکستان بہت جلد ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ سے بھی نکل آئیگا۔قبل ازیں ایئر یونیورسٹی ملتان کے سالانہ کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ تعلیم کیساتھ محنت، لگن اور جذبہ انسان کی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں،انفارمیشن ٹیکنالوجی نے زندگیوں میں انقلاب برپا کر دیاہے،نوجوان ہمارا قیمتی سرمایہ ہیں کامیابی کیلئے ہمیں قائد اعظمؒ کے زریں اصولوں کو اپنانا ہو گا،بھارت میں انتہا پسند ہندو جماعت بی جے پی کی کامیابی، اس کی جابرانہ ذہنیت نے پاکستان اور خطے کو شدید خطرات سے دوچار کر دیا ہے،عمران خان نے کرتارپور راہداری کا افتتاح کر کے دنیا بھر کو پیغام دیا ہے کہ پاکستان قائداعظمؒ کے مذہبی آزادی اور رواداری کے زریں اصولوں پر عمل پیرا ہے،کشمیریوں کی حق خودارادیت کی اصولی جدوجہد میں ان کی معاونت جاری رکھیں گے۔

شاہ محمود قریشی

مزید : صفحہ اول