پیر عبد لقادر جیلانی انسٹیٹیوٹ گمبٹ میں 100کامیاب جگر کی پیوندکاریاں 

    پیر عبد لقادر جیلانی انسٹیٹیوٹ گمبٹ میں 100کامیاب جگر کی پیوندکاریاں 

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) پیر عبدالقادر شاہ جیلانی انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز گمبٹ نے 100 کامیاب جگر کی پیوند کاری کی۔یہ بات وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کو ہفتہ کے روز ڈائریکٹر  پیر عبدالقادر شاہ جیلانی انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز گمبٹ، ڈاکٹر عبدالرحیم بخش بھٹی نے ایک تفصیلی رپورٹ کے ذریعے بتائی۔اس ضمن میں وزیر اعلی سندھ نے کہا، "یہ پہلا بار ہوا ہے کہ پاکستان کے سرکاری شعبے میں صحت کی سہولت میں 100 پیچیدہ طریقہ کار کے جگر کی پیوند کاری کامیابی سے انجام دیئے گئے ہیں۔" وزیراعلی کو دی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لیور ٹرانسپلانٹ ڈیپارٹمنٹ جنوری 2016 میں انسٹیٹیوٹ میں قائم کیا گیا تھا  اورپہلا ٹرانسپلانٹ اسی سال اپریل میں کیا گیا تھا۔ڈائریکٹر انسٹیٹیوٹ ڈاکٹر رحیم بخش بھٹی  کے مطابق جگر کی پیوندکاری کے کامیاب آپریشن کا سفر انسٹی ٹیوٹ کے عملے اور ڈاکٹروں کی انتہک محنت و لگن سے مکمل ہوا۔ اس حوالے سے شعبہ جگر پیوندکاری کے سربراہ ڈاکٹر عبدالوہاب ڈوگر کا کہنا ہے کہ انسٹی ٹیوٹ میں جگر کی پیوندکاری کی ٹیم زیادہ تر نوجوانوں پر مشتمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسٹی ٹیوٹ نے پیوندکاری کا پہلا کامیاب آپریشن چند سال قبل کیااور 100 جگر کی پیوندکاری کے کامیاب آپریشن کی تکمیل ایک بڑی کامیابی ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسٹی ٹیوٹ میں مستقبل میں یومیہ دو جگر کی پیوندکاری کی جائیں گی۔ڈاکٹر عبدالوہاب کا کہنا ہے کہ انسٹی ٹیوٹ ملک کا پہلا ادارہ ہے جو مفت جگر کی پیوندکاری کرتا ہے اور اس کا آغاز 2016میں سندھ حکومت کی جانب سے دی جانے والی ایک ارب روپے کی گرانٹ کی مدد سے کیا گیاہے۔انہوں نے بتایا کہ جگر کی پیوندکاری کے آپریشن کی لاگت میں تقریبا60 سے70لاکھ روپے کا خرچ آتا ہے تاہم وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی جانب سے فنڈز کی فراہمی سے یہ آپریشن مفت کیا جاتا ہے جس کی کامیابی کا تناسب 95فیصد ہے۔انہوں نے کہا کہ انسٹی ٹیوٹ کی ویب سائٹ کی اس سلسلے میں معلومات اور رابطہ کیا جاسکتا ہے۔

مزید : صفحہ اول