اداروں کو اختیار ات کی لڑائی نہیں لڑنی چاہیے،فوادچودھری

اداروں کو اختیار ات کی لڑائی نہیں لڑنی چاہیے،فوادچودھری
اداروں کو اختیار ات کی لڑائی نہیں لڑنی چاہیے،فوادچودھری

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی فوادچودھری نے کہاہے کہ اداروں کو اختیار ات کی لڑائی نہیں لڑنی چاہیے، اداروں کو اختیارات کا توازن رکھنا چاہیے،اداروں کے درمیان نئے میثاق کی ضرورت ہے،آرمی چیف اور چیف جسٹس نے ہمیشہ اداروں کی حمایت کی ہے، چیف جسٹس آف پاکستان بہت بڑے جج ہیں،چیف جسٹس نے کہا تھا کہ اداروں کے درمیان ڈائیلاگ کی ضرورت ہے، دونوں ایوانوں کی مشترکہ پارلیمانی کمیٹی قائم کی جائے۔

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمنٹ کو بحیثیت ادارہ تسلیم کرنا چاہیے،اپوزیشن کے کردار کو بھی تسلیم کرنا چاہیے،آرمی ایکٹ اور معاشی پالیسیوں پر فوری اتفاق رائے قائم کرناچاہیے،انہوں نے کہاکہ ملکی مسائل کو ایک ادارہ یا ایک فرد حل نہیں کرسکتا،جب تک اداروں میں میثاق نہیں ہوتا مسائل میں جکڑے رہیں گے،مسائل کے حل کیلئے اداروں کو مل کر جدوجہد کرنا ہوگی۔

فوادچودھری نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان کا دل قوم کے ساتھ دھڑکتا ہے،وزیراعظم حقیقی معنوں میں ملک کو نیا پاکستان بناناچاہتے ہیں،وزیراعظم عمران خان کا کوئی ذاتی مفاد نہیں،وزیراعظم عمران خان کو طاقت یا پروٹوکول میں کوئی دلچسپی نہیں،انہوں نے کہاکہ چین کے تعاون سے 2022 میں ہمارا پہلا خلائی مشن جائے گا،پاک فضائیہ نے خلا باز منتخب کرنے کا کام شروع کر دیا ہے، ان کاکہناتھاکہ چین کے بعد روس کے ساتھ کمیٹی قائم کرنے جارہے ہیں،کمیٹی سائنس و ٹیکنالوجی سے متعلق تعاون بڑھائےگی،فوادچودھری نے مزید کہاکہ پاکستان میں سولر پینل بننا شروع ہوجائےگا،پوری دنیا بیٹریز پر چلی گئی ہے،پاکستان جنوبی ایشیا میں لیتیھئم بیٹری بنانے والا پہلا ملک ہوگا،پاکستان میں بیٹری سے چلنے والی بسیں متعارف کرائیں گے۔وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی کا مزید کہناتھا کہ اگلے10سال میں بائیوٹیکنالوجی سے4بلین ڈالر کی برآمدات بڑھائیں گے،اینٹی ریبیز ویکسین خود بنائیں گے۔ فوادچودھری کاکہناتھا کہ قیام پاکستان کیلئے طلبا یونینز نے تحریک چلائی،دنیا کے بڑے تعلیمی اداروں میں طلبایونینز فعال ہیں،ہمیں حقیقی طلبا یونینز کی طرف بڑھنا چاہیے۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور