ڈاکٹر سے اجتماعی زیادتی کے بعد جلا کر قتل کرنے کا واقعہ، ملزم کی ماں نے اپنے بیٹے کو آگ لگاکر سزائے موت دینے کا مطالبہ کردیا

ڈاکٹر سے اجتماعی زیادتی کے بعد جلا کر قتل کرنے کا واقعہ، ملزم کی ماں نے اپنے ...
ڈاکٹر سے اجتماعی زیادتی کے بعد جلا کر قتل کرنے کا واقعہ، ملزم کی ماں نے اپنے بیٹے کو آگ لگاکر سزائے موت دینے کا مطالبہ کردیا

  



حیدر آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارت میں ایک 26 سالہ ویٹرنری ڈاکٹر لڑکی کو اجتماعی زیادتی کے بعد زندہ جلا کر قتل کرنے والے چاروں ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے، گرفتار ملزمان میں سے ایک کی ماں نے مطالبہ کیا ہے کہ اس کے بیٹے کو بھی اسی طرح جلایا جائے جس طرح اس نے متاثرہ لڑکی کو جلایا تھا۔

ٹائمز آف انڈیا کو دیے گئے انٹرویو میں ملزم سی چنا کیشا ولو کی ماں شیاملا نے کہا کہ اس کے بیٹے کو پھانسی دی جائے یا اسے بھی اسی طرح جلایا جائے جس طرح اس نے ڈاکٹر کو آبرو ریزی کے بعد جلایا ہے۔ ’ میری بھی ایک بیٹی ہے اور میں متاثرہ خاندان کی تکلیف کو سمجھ سکتی ہوں، اگر میں اپنے بیٹے کو بچاﺅں گی تو لوگ پوری زندگی مجھ سے نفرت کریں گے۔‘

شیاملا نے بتایا کہ اس کا ملزم بیٹا گردے کے عارضے میں مبتلا ہے اور ہر 6 مہینے بعد اس کا علاج کروایا جاتا ہے۔ ’ میرے بیٹے کی 5 ماہ پہلے پسند کی شادی ہوئی تھی۔ ‘

خیال رہے کہ کچھ روز پہلے بھارتی ریاست تلنگانہ میں 4 ملزمان نے ایک خاتون ویٹرنری ڈاکٹر کو اغوا کے بعد اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور اسے زندہ جلا کر قتل کردیا۔ واقعے کے خلاف پورے ملک کے عوام میں سخت غم و غصہ موجود ہے اور ملزمان کو اسی طریقے سے سزائے موت دیے جانے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

مزید : جرم و انصاف