37سالہ شخص کی اچانک منہ کے کینسر سے موت، سگریٹ بھی نہیں پیتا تھا، لیکن کیا علامات تھیں جو نظرانداز کر دیں؟

37سالہ شخص کی اچانک منہ کے کینسر سے موت، سگریٹ بھی نہیں پیتا تھا، لیکن کیا ...
37سالہ شخص کی اچانک منہ کے کینسر سے موت، سگریٹ بھی نہیں پیتا تھا، لیکن کیا علامات تھیں جو نظرانداز کر دیں؟

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک 37سالہ شخص کی اچانک منہ کے کینسر سے موت واقع ہو گئی جو نہ تو سگریٹ پیتا تھا اور نہ ہی شراب نوشی کرتا تھا۔ اس صحت مندانہ زندگی گزارنے والے ایلن بیرک نامی شخص کو منہ میں سوجن کا مسئلہ رہا اور سرخ و سفید دھبے بنتے رہے۔ یہ اس کو لاحق ہونے والے خطرناک کینسر کی علامات تھیں جنہیں اس نے نظر انداز کیا اور موت کے منہ میں چلا گیا۔

مرسیسائیڈ کے رہائشی ایلن کی ریڈیو تھراپی بھی ہوتی رہی اور کیموتھراپی بھی لیکن ہر بار کینسر واپس آ جاتا۔ علاج کے دوران اس کی 90فیصد زبان بھی کاٹ دی گئی لیکن کچھ کام نہ آیا۔ بالآخر ڈاکٹروں نے اس کی فیملی سے کہہ دیا کہ اب وہ ایلن کو بچانے کے لیے مزید کچھ نہیں کر سکتے۔ ایلن کی اہلیہ ڈیبی کا کہنا تھا کہ ”ایلن ڈینٹسٹ کے پاس جانے سے کتراتا تھا۔ اگر وہ ڈینٹسٹ کے پاس باقاعدگی سے جاتا تو یقینا وہ اس کے منہ میں کینسر کی علامات دیکھ کر بروقت متنبہ کر دیتے اور شاید اس کی جان بچ جاتی۔ میں لوگوں کو ہدایت کروں گی کہ وہ ڈینٹسٹ سے باقاعدگی سے چیک اپ کروایا کریں تاکہ اس تکلیف سے دوچار نہ ہوں جس سے ہم گزر رہے ہیں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -