آتش فشاں میں گہری سرنگ کھودنے کا انتہائی خطرناک منصوبہ، سائنسدانوں نے سخت وارننگ دے دی

 آتش فشاں میں گہری سرنگ کھودنے کا انتہائی خطرناک منصوبہ، سائنسدانوں نے سخت ...
 آتش فشاں میں گہری سرنگ کھودنے کا انتہائی خطرناک منصوبہ، سائنسدانوں نے سخت وارننگ دے دی
سورس: Flickr.com (creative commons license)

  

ریکجاویک(مانیٹرنگ ڈیسک) آئس لینڈ میں سائنسدانوں نے متحرک آتش فشاں کے درمیان سے ایک گہری سرنگ کھودنے کے انتہائی خطرناک پراجیکٹ کی منصوبہ بندی شروع کر رکھی ہے جس کے متعلق دیگر ماہرین کی طرف سے انتہائی سخت تنبیہ کی جا رہی ہے۔سائنسدانوں کی ایک ٹیم کی طرف سے متنبہ کیا جا رہا ہے کہ اس حرکت سے آتش فشاں پوری شدت کے ساتھ پھٹ سکتا ہے ۔ ڈیلی سٹار کے مطابق یہ سرنگ یورپی ملک آئس لینڈ کے شمال مغربی علاقے میں واقع کرافلا نامی آتش فشاں میں کھودی جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق یہ سرنگ 1.2میل گہری ہو گی اور پگھلے ہوئے پتھروں کے درمیان سے گزر کر جائے گی۔ اس جگہ پر درجہ حرارت اتنا زیادہ ہو گا، کہ جتنا زمین کے اندر وسط میں ہوتا ہے۔ اس حصے سے سرنگ گزارنا زمین کے مرکز سے سرنگ گزارنے کے مترادف ہو گا۔ اس سرنگ کے ذریعے دنیا کی پہلی ’میگما آبزرویٹری‘ قائم کی جائے گی جس میں سے ماہرین 1300ڈگری سینٹی گریڈ پر پگھلے ہوئے پتھروں کا نظارہ کر سکیں گے۔اس پراجیکٹ پر کام کرنے والی سائنسدانوں کی عالمی ٹیم کا کہنا ہے کہ اس پراجیکٹ کی کامیابی سے ممکنہ طور پر آتش فشاں پھٹنے کی پیشگی اطلاع کا نظام تیار کرنے اور توانائی کا نیا ذریعہ دریافت کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -