سعودی عرب میں توطین پروگرام کا دوسرا ایڈیشن، 1 لاکھ 70 ہزار ملازمتیں

سعودی عرب میں توطین پروگرام کا دوسرا ایڈیشن، 1 لاکھ 70 ہزار ملازمتیں
سعودی عرب میں توطین پروگرام کا دوسرا ایڈیشن، 1 لاکھ 70 ہزار ملازمتیں

  

ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن)  سعودی عرب  میں ملازمتوں کو بڑھانے کے لیے سرکاری سکیم کے دوسرے ایڈیشن کے آغاز کی بدولت  مملکت میں 1 لاکھ 70 ہزار  سے زائد نئی ملازمتیں پیدا ہونے والی ہیں۔ وزارت برائے انسانی وسائل اور سماجی ترقی کے زیر اہتمام توطین پروگرام صنعت کے شعبے میں 25 ہزار  ملازمتیں پیدا کرے گا، اس کے ساتھ صحت، ٹرانسپورٹ اور لاجسٹک خدمات، اور رئیل اسٹیٹ اور تعمیراتی شعبوں میں روزگار کے 20 ہزار  مواقع پیدا ہوں گے۔ توطین پروگرام کے اس ایڈیشن میں تجارتی شعبے میں  15 ہزار  اور دیگر متفرق شعبوں میں 40 ہزار  روزگار کے مواقع پیدا کرنے پر بھی غور کیا گیا ہے۔

"عرب نیوز "کے مطابق اس اقدام کے دوسرے ایڈیشن سے صرف سیاحت کے شعبے میں  30 ہزار  ملازمتیں پیدا ہوں گی، کیونکہ سعودی عرب 2030 تک مملکت کو عالمی سیاحتی مقام بنانے کے لیے سخت محنت کر رہا ہے۔ سعودی عرب کی قومی سیاحت کی حکمت عملی کے مطابق، مملکت اس شعبے میں 10 لاکھ ملازمتیں پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ 2030 تک سالانہ 100 ملین سیاحوں کو راغب کرنا چاہتی ہے۔

توطین پروگرام سعودی صنعتی ترقیاتی فنڈ کا ایک اقدام ہے جس میں سعودیوں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ مقامی مواد کے اخراجات میں اضافے کی سمت میں مدد اور فروغ دینا ہے۔ سعودآئزیشن، جسے سعودی نیشنلائزیشن سکیم، یا نطاقت کے نام سے جانا جاتا ہے، اقتصادی کامیابی کی جانب ایک اہم قدم سمجھا جاتا ہے، کیونکہ مملکت اب اپنی ایسی معیشت کو  متنوع بنا رہی ہے جو کئی دہائیوں سے تیل پر منحصر تھی۔

مزید :

عرب دنیا -