عام انتخابات ، ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا،کمشنر ڈیرہ ڈویژن

        عام انتخابات ، ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گا،کمشنر ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

پشاور(سٹاف رپورٹر)کمشنر ڈیرہ اسماعیل خان ڈویژن ظفر الاسلام نے کہا ہے کہ عام انتخابات کے حوالے سے جاری کردہ تمام تر ایس او پیز پر مکمل عملدرآمد کو ہر صورت یقینی بنایا جائے گا لہذا تمام سیاسی جماعتیں ان ایس او پیز پر من و عن عملدرآمد کریں بصورت دیگر انکے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ یہ ہدایات انہوں نے عام انتخابات کے انتظامات کے سلسلے میں اپنے دفتر میں منعقدہ اجلاس کی صدار ت کرتے ہوئے دیں۔ اجلاس میں ریجنل الیکشن کمشنر، ریجنل پولیس آفیسر، ڈپٹی کمشنرز، ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنرز، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرز سمیت سیاسی جماعتوں کے نمائندوں، عہدیداران و دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔اجلاس کے دوران عام انتخابات کیلئے جاری کردہ ایس او پیز پر تفصیلی گفتگو کی گئی جس کے دوران کمشنر ڈیرہ اسماعیل خان ڈویژن ظفر الاسلام نے کہا کہ آج کے اجلاس کا مقصد الیکشن ایس او پیز سے متعلق آگاہی فراہم کرنا ہے تاکہ اس پر مکمل عملدرآمد کو یقینی بنایا جا سکے۔ صوبائی حکومت نے جو ایس او پیز جاری کیے ہیں وہ تمام جماعتوں کو شیئر کیے جا رہے ہیں تاکہ اچھے ماحول اور تمام تر الیکشن پراسز کے دوران شفافیت کو یقینی بنایا جا سکے۔ ایس او پیز کے مطابق تمام سیاسی جماعتیں ہر پندرہ روز کے جلسوں اور کارنر میٹنگزکے حوالے سے شیڈول اپنے متعلقہ ڈپٹی کمشنر سے نہ صرف شیئر کریں گے بلکہ اس سلسلے میں این او سی بھی حاصل کریں گے تاکہ سیکورٹی صورتحال اور پروگرامز کی ترتیب کو مینج کیا جا سکے لہذا تمام جماعتیں تعاون کا مظاہرہ کریں۔ متعلقہ ڈپٹی کمشنر سے این او سی کے حصول کے بغیر جلسہ غیر قانونی تصور ہو گا۔ اسی طرح چند روز میں جلسے کے مقامات بھی شیئر کر دیے جائیں گے تاکہ سیاسی جماعتیں ان مقامات پر اپنے پروگرامز کے انعقاد کیلئے درخواست دے سکیں۔مزید یہ کہ جلسے کی این او سی کے حصول کے بعد وقت کی پابندی کو بھی یقینی بنا ئیں تاکہ ایس او پیز کی خلاف ورزی نہ ہو۔ غیر قانونی ، فرقہ وارانہ، تذلیل ، وغیرہ یا دوسری جماعتوں پر تنقید سے گریز کریں جبکہ اس مقصد کیلئے لاﺅڈ سپیکر کے استعمال پر بھی تشہیری بینرز نمایاں مقامات پر لگا ئے جا سکتے ہیں مگر اس سے عوام و ٹریفک روانی متاثر نہ ہو۔ پارٹیز کی نجی سیکورٹی کا لائسنس یافتہ ہو نا لازمی ہے۔ ایس او پیز پر عملدرآمد کے حوالے سے حلف نامہ بھی جمع کرانے کی پابندی ہو گی۔ ان تمام اقدامات کا مقصد نمائندوں/امیدواروں کی سیکورٹی ، امن و عامہ کی صورتحال اور پروگرامز کو سیکورٹی فراہمی یقینی بنانا ہے۔اسی طرح کارنر میٹنگز کا شیڈول بھی شیئر کریں۔ تمام پروگرامز دن کے اوقات میں ترتیب دیں۔ تشہیری مواد سرکاری عمارات پر آویزا ں نہ کریں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ریجنل پولیس آفیسر نے کہا کہ ایک پارٹی دوسری پارٹی کے بینرز مت اتاریں ورنہ انکے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔