عالم اسلام کی اضطرابی کیفیت کی وجہ مسلم ممالک میں بیرونی مداخلتیں ہیں، طاہر اشرفی

عالم اسلام کی اضطرابی کیفیت کی وجہ مسلم ممالک میں بیرونی مداخلتیں ہیں، طاہر ...

لاہور(خبر نگار خصوصی)شام ، کشمیر اور فلسطین کے مسائل کو حل کیے بغیر دنیا میں امن کے قیام کی کوششیں کامیاب نہیں ہو سکتیں۔فرقہ وارانہ تشدد ، انتہاء پسندی اور دہشت گردی کے خاتمے کیلئے مسلم ممالک کو اپنے نظریات دوسرے ممالک پر مسلط کرنے کی کوششوں کو ختم کرنا ہو گا۔ عالم اسلام کی اضطرابی کیفیت کی وجہ مسلم ممالک میں بیرونی مداخلتیں ہیں۔ پاکستان میں مذہبی طبقہ کو عصر حاضر کے تقاضوں کے مطابق عوام الناس کی رہنمائی کرنی ہو گی۔ یہ بات پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے پیغام اسلام کانفرنس کے سلسلہ میں ہونے والے مختلف مکاتب فکر کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پر مولانا محمد خان لغاری ، مولانا عبد الحمید صابری ، مولانا طاہر عقیل ، مولانا محمد شفیع قاسمی ، مولانا اسد اللہ فاروق ، مولانا ایوب صفدر ، مولانا غلام اللہ خان نے بھی خطاب کیا ۔ حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے کہا کہ انتہاء پسندی اور فرقہ وارانہ تعصب اور نفرتوں کی وجہ سے مسلم نوجوان دہشت گرد تنظیموں کی طرف راغب ہو رہے ہیں۔مسلم مفکرین اور دانشوروں کو انتہاء پسندانہ اور تکفیری سوچ کو چیلنج کرنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ عالم اسلام کے قائدین ، اقوام متحدہ ، امریکہ ، برطانیہ اور یورپی ممالک نے گذشتہ ساٹھ سالوں میں مسئلہ فلسطین اور کشمیر حل نہیں کیا اور اب شام اور عراق کی صور تحال بھی مسلم امہ کیلئے مایوسی پیدا کر رہی ہے ۔ روس اور بعض دیگر ممالک شام کے مسئلہ کو حل کرنے کی بجائے دا عش کے نام پر بے گناہ شامیوں کو نشانہ بنا رہے ہیں، جس سے مسلم نوجوانوں کے اندر اضطراب بڑھ رہا ہے اور دہشت گرد تنظیمیں تقویت پکڑ رہی ہیں۔ جمعیت علماء پاکستان کے رہنما سردار محمد خان لغاری نے کہاکہ سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی کو جلد ختم ہونا چاہیے ۔ سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی سے دہشت گرد قوتیں فائدہ اٹھا سکتی ہیں اور اس کشیدگی سے مسلمانوں کے مسائل میں مزید اضافہ ہو گا۔ پاکستان علماء کونسل اسلام آباد کے صدر مولانا عبد الحمید صابری نے کہا کہ مسلم امہ فلسطین ، کشمیر اور شام کے مسئلہ کا فوری حل چاہتی ہے ۔ بعض ممالک کے شام کو میدان جنگ بنانے سے مختلف مسالک کے درمیان دنیا بھر میں کشیدگی میں اضافہ ہو رہا ہے ۔ پاکستان علماء کونسل کے مرکزی فنانس سیکرٹری مولانا اسد اللہ فاروق نے کہا کہ ارض حرمین الشریفین کے تحفظ اور دفاع کیلئے پوری مسلم امہ متحد ہے ۔ سعودی عرب اور پاکستان میں دھماکے کرنے والے امۃ مسلمہ کے دشمن ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 10 فروری کو اسلام آباد میں ہونے والی ’’پیغام اسلام کانفرنس ‘‘ فرقہ وارانہ تشدد اور دہشت گردی کے خلاف جدوجہد کا واضح لائحہ عمل پیش کرے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1