18 سالہ طالبعلم غائب گرین ٹاؤن پولیس کے ٹاؤٹ نے اغوا کیا ،لواحقین کا الزام

18 سالہ طالبعلم غائب گرین ٹاؤن پولیس کے ٹاؤٹ نے اغوا کیا ،لواحقین کا الزام

لاہور(وقائع نگار) زمین کھا گئی یاآسمان نگل گیا،18سالہ طالب علم کو گرین ٹاؤن پولیس کے مبینہ ٹاؤٹ نے ا پنے ساتھیوں کے ہمراہ مبینہ طورپر اغواکر لیا ،لواحقین اپنے جواں سال بیٹے کی تلاش کے لیے وحدت کالونی اورگرین ٹاؤن کے تھانوں کے چکر لگانے پر مجبور ہو گئے۔نمائندہ’’ پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے مغوی ساجد کے بھائی بشارت احمد ،کزن محمد اصغر اور دوست محمد عمران نے بتایا کہ وہ وحدت کالونی شاہ کمال روڈ کینال پورہ بابا تاج دین چوک کی گلی نمبر 2کے رہائشی ہیں ان کا بھائی محمد ساجد ایف اے کا طالب علم ہے ۔دو روز قبل وہ تھانہ وحدت کالونی کے علاقہ مسجد کاف چوک پر واقع ایک سنوکر کلب میں بیٹھا تھا کہ دن دیہاڑ ے گرین ٹاؤن تھانہ میں پولیس کاٹاؤٹ منہا سپاہی وہاں اپنے چند ساتھیوں کے ساتھ پرائیویٹ موٹر سائیکلوں پر آیا اور اس نے ساجد کو پکڑ لیا اور گھسیٹتے ہوئے اپنے ساتھ لیکر چلا گیا ۔انہوں نے بتایا کہ اس حوالے سے ہم نے تھانہ وحدت کالونی میں رابطہ کیا تو پولیس اہلکاروں نے بتایا کہ ساجد ان کے پاس نہیں ہے۔ بعد ازاں وہ تھانہ گرین ٹاؤن میں گئے جہاں پولیس اہلکاروں اور ایس ایچ او نے بھی ساجد کی موجودگی سے لاعلمی ظاہر کر دی،البتہ تھانہ سے انہوں نے منہا سپاہی کا نمبر لے لیا جس سے رابطہ کیا گیا تو اس نے بتایا کہ ساجد اس کے پاس ہے اور اسے ایک پرائیویٹ کوارٹر میں تفتیش کے لیے رکھا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ منہا سپاہی کی جانب سے ساجد کی رہائی کے لیے 50ہزار کی رقم مانگی گئی، انکار کی صورت میں اس نے ساجد کو ڈکیتی ،راہزنی سمیت دیگر سنگین جرائم میں ملوث کرنے کی دھمکیاں دی ہیں ۔پولیس حکام ان کی مدد کریں ۔اس حوالے سے منہا سپاہی سے اس کے نمبر پر رابطہ کیا گیا تو اس کا کہنا تھا کہ ساجد کو اس نے اعلیٰ افسران کے حکم پر پکڑا ہے ۔سبزہ زار میں ایک ڈکیتی کے ملزم نے دوران تفتیش اس کا نام لیا تھاجس پر گرین ٹاؤن پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے اس کو پکڑا ہے اس کے خلاف تھانہ سبزہ زار پولیس کارروائی کرے گی ساجد کو ان کے حوالے کر دیا گیا ہے ۔سبزہ زار تھانہ میں رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ ساجد نامی کوئی مجرم ان کی حراست میں نہیں ہے ۔

مزید : علاقائی