پنجاب یونیورسٹی میں طلبہ تنظیموں میں فائرنگ تبادلہ ،دو طالبعلم شدید زخمی

پنجاب یونیورسٹی میں طلبہ تنظیموں میں فائرنگ تبادلہ ،دو طالبعلم شدید زخمی

لاہور(اپنے نامہ نگار سے ،وقائع نگار) پنجاب یونیورسٹی میں رات گئے دو طلبہ تنظیموں کے مابین تصادم اور فائرنگ کے تبادلہ میں دو طلبہ شدید زخمی ہو گئے ،یونیورسٹی انتظامیہ واقعہ سے دو گھنٹے تک لاعلم رہی بعد ازا ں پولیس کے موقع پر پہنچنے پرانتظامیہ حرکت میں آگئی جبکہ زخمیوں کی حالت ہسپتال میں نازک بتائی جاتی ہے ۔ذرائع کے مطابق پنجاب یونیورسٹی کے ہاسٹل نمبر 1میں کمروں کی الاٹمنٹ کے معاملہ میں اسلامی جمیعت طلبہ اور بلوچ سٹوڈنٹ فیڈریشن کے طلبہ کے مابین تصادم ہو گیا اور دونوں گروپوں کے مابین لڑائی جھگڑا ہوا جو کہ ایک گھنٹے تک جاری رہا بعد ازاں ایک گروپ نے دوسرے پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں دو طلبہ جن کے نام عارف خان اور بابر حسین بتائے جاتے ہیں شدید زخمی ہو گئے ۔جنہیں ساتھی طلبہ نے طبی امداد کے کیے جناح ہسپتال میں منتقل کیا جبکہ میڈیا پرخبر آنے پر پولیس جائے وقوعہ پر پہنچ گئی ۔پولیس کے موقع پر آنے پر یونیورسٹی انتظامیہ حرکت میں آئی جبکہ ہاسٹل انچارج ڈاکٹر شکیل نے موقع پر پہنچ کر جائے وقوعہ کا معائنہ کیا ۔جمعیت طلبہ کے ترجمان کا کہنا تھاکہ اگر پولیس نے ملزمان کو 24گھنٹے میں گرفتار نہ کیا تو وہ یونیورسٹی کے تمام شعبوں کا بائیکارٹ کریں گے اور وائس چانسلر کے دفتر کے باہر احتجاج کریں گے ۔اس حوالے سے پنجاب یونیورسٹی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ واقعہ سے لاعلم ہونے پر ہاسٹل کے انچارج ڈاکٹر شکیل کے خلاف کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے اور ان کو شوکاز نوٹس دیا جائے گا اور جواب طلبی کی جائے گی جبکہ ہاسٹل کے کمروں کی الاٹمنٹ میں کوتاہی اور سستی برتنے والے انچارجز کے خلاف الگ سے کارروائی کی جائے گی۔

مزید : صفحہ آخر