سوئی گیس ریجن کی ٹاسک فورس کے چھاپے، پونے ارب کی گیس چوری پکڑی گئی

سوئی گیس ریجن کی ٹاسک فورس کے چھاپے، پونے ارب کی گیس چوری پکڑی گئی

لاہور( لیاقت کھرل) سوئی گیس کمپنی لاہور ریجن کے جی ایم میاں محمود ضیاء احمد کی نگرانی میں ٹاسک فورس نے سال نو کے پہلے ماہ کے دوران 100 سے زائد مقامات پر چھاپوں میں پونے ارب سے زائد کی گیس چوری پکڑ لی ہے۔ گیس چوروں کے خلاف 20 سے زائد مقدمات درج کروائے گئے ہیں جس سے گیس کمپنی لاہور ریجن کے لائن لاسز اوریو ایف جی کی شرح میں 6 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ گیس کمپنی لاہور ریجن کے جی ایم میاں محمود ضیاء احمد کے مطابق ان کی تعیناتی کے بعد اب تک گیس چوروں کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائی کا سلسلہ جاری ہے جسے گیس چوری کے خلاف کریک ڈاؤن سے لاہور ریجن میں لائن لاسز اور گیس چوری میں کئی گنا کمی واقع ہوئی ہے۔ سال نو کے پہلے ماہ میں گیس چوری کے خلاف 100 سے زائد مقامات پر چھاپے مارے گئے ہیں جس میں جعلی نیٹ ورک اور ڈائریکٹ بائی پاس لگا کر گیس چوروں کے خلاف سب سے زیادہ کارروائی کی گئی ہے، جس میں سال نو کی سب سے بڑی کارروائی کے دوران مومن پورہ علاقہ میں ایک تار گرم کرنے والی فیکٹری میں چھاپہ مار کر ایک کروڑ روپے کی گیس چوری پکڑی گئی ہے۔ اسی طرح کاہنہ کے علاقہ میں 50 گھروں کا جعلی نیٹ ورک پکڑ کر لاکھوں روپے جرمانہ کیا گیا جبکہ لکھو ڈیئر کے علاقہ میں بھی 50 گھروں کا جعلی نیٹ ورک پکڑا گیا ہے جس پر ایک کروڑ روپے کا جرمانہ اور مقدمہ درج کروایا گیا ہے۔ اسی طرح گیس چوری کے خلاف کارروائی کے حوالے سے چیف انجینئر عمران الطاف ساہی کی نگرانی میں ڈسٹری بیوشن آفیسر چودھری شرافت علی اور دیگر ارکان پر مشتمل ٹاسک فورس نے رائے ونڈ روڈ پر ایچیسن ہاؤسنگ سکیم میں چھاپے کے دوران 200 گھروں کا سب سے بڑا جعلی نیٹ ورک پکڑا ہے جس میں 2 کروڑ روپے جرمانہ اور مقدمہ درج کروایا گیا ہے، جبکہ پتوکی میں سابق وزیر اعلیٰ سردار عارف نکئی کے گاؤں واں آدن میں پولیس پارٹی کے ہمراہ چھاپہ مار کر گیس کا ڈائریکٹ لائن سے شراب تیار کرنے والی بھٹی پر چھاپہ مارا گیا جس میں 20 لاکھ روپے جرمانہ کیا گیا ۔ اس کے ساتھ اسی گاؤں میں بائی پاس لگا کر 15 گھروں کا جعلی نیٹ ورک پکڑا گیا ہے اور ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کروایا گیا۔ اسی طرح ہربنس پورہ کے علاقہ ڈیرہ حکیماں میں چھاپہ مار کر بوگس گیس میٹر کے ذریعے 100 گھروں پر مشتمل جعلی نیٹ ورک پکڑا گیا ، جس پر مقدمہ درج کروانے کے ساتھ ساتھ ایک کروڑ سے زائد کا جرمانہ بھی کر دیا گیا، جبکہ الٰہ آباد قصور میں چھاپے کے دوران بوگس سپلائی لائن کا سراغ لگایا گیا جس میں 100 گھروں کا جعلی نیٹ ورک پکڑا گیا، جس میں 50 لاکھ سے زائد کا جرمانہ اور مقدمہ درج کروایا گیا، جبکہ ڈیفالٹرز کے خلاف بھی کارروائی کی گئی ہے جس میں کارروائی کرتے ہوئے گلبرگ میں چاندنی شادی ہال کی گیس منقطع کی گئی جو کہ دس لاکھ کا ڈیفالٹر تھا۔ اسی طرح شالیمار سکیم باغبانپورہ میں ڈھلائی کی فیکٹری پر چھاپے کے دوران 27 لاکھ روپے کا ڈیفالٹر ہونے پر گیس کنکشن منقطع کیا گیا جبکہ کاہنہ کے علاقہ میں بھی ڈھلائی کی فیکٹری میں 11 چھاپہ مار کر گیس کنکشن منقطع کیا گیا جو کہ 15 لاکھ روپے کا ڈیفالٹر تھا اور اس کے باوجود گیس استعمال کی جا رہی تھی۔ اسی طرح لکھوڈیئر روڈ، باغبانپورہ ، مناواں، شالیمار ، مومن پورہ، ہربنس پورہ سمیت کوٹ لکھپت اور چونگی امر سدھو کے علاقہ میں چھاپے مارے گئے ہیں۔ جی ایم محمود ضیاء احمد نے ’’پاکستان‘‘ کو بتایا کہ گیس چوروں کے خلاف ماہ فروری میں سب سے زیادہ کارروائی اور چھاپے مارے جائیں گے اور گیس چوروں کو رنگے ہاتھوں پکڑ کر ایف آئی اے اور پولیس کے حوالے کیا جائے گا۔ س میں گیس کی یو ایف جی انشاء اللہ 6 سے 7 فیصد تک لانے میں کامیابی حاصل کی جائے گی۔

مزید : صفحہ آخر