انسانی زندگی کا کوئی نعم البدل نہیں،شہدا ء کے لواحقین کو تنہا نہیں چھوڑیں گے:قائم علی شاہ

انسانی زندگی کا کوئی نعم البدل نہیں،شہدا ء کے لواحقین کو تنہا نہیں چھوڑیں ...

خیرپور (خصوصی رپورٹ ) وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ ایس پی خیرپور نے شہداء ، غازیوں اور اچھی کارکردگی دکھانے والے پولیس افسران اور اہلکار وں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے اچھی روایت قائم کی ہے دوسرے اضلاع کے ایس ایس پیز بھی ایسی روایات قائم کریں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ پولیس خیرپور کی جانب سے شہداء پولیس افسران کے ورثاء اور پولیس افسران کو ایوارڈ دینے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پہلے امن و امان قائم کرنے والے پولیس افسران سوچتے تھے کہ ان کے جانے کے بعد ان کے بچوں کا کیا ہوگا جب سے پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت آئی ہے تب سے پولیس کے افسران اور اہلکاروں کی جانب سے جان کا نذرانہ پیش کرنے والوں کے لیے معاوضے کی رقم دولاکھ روپے سے بڑھا کر 20 لاکھ روپے کرنے کے علاوہ ورثاء کو روزگار اور رہائش فراہم کررہی ہے انہوں نے کہا کہ انسانی زندگی کا کوئی نعم البدل نہیں ہے لیکن حکومت شہداء کے لواحقین کو کسی صورت میں اکیلا نہیں چھوڑے گی اور ہر ممکن ان کی امداد کی جائے گی وزیر اعلیٰ نے کہا کہ 115 شہید ہونے والے پولیس اہلکاروں کو شہید بینظیر بھٹوہاؤسنگ سیل سے 25 ایکڑ پر مشتمل رہائشی کالونی دی جارہی ہے جس میں تمام بنیادی سہولتیں فراہم کی جائیں گی انہوں نے کہا کہ کراچی میں جناح ٹرمینل پر دہشت گردی کے واقعے میں غیر معمولی بہادری کا مظاہرہ کرنے والے پولیس اہلکاروں خاص طور پر ایس پی خیرپور پیر محمد شاہ کے کو ایوارڈ دینے کے لیے وفاقی حکومت سے سفارش کردی گئی ہے انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت کی جانب سے محکمہ پولیس کے افسران اور اہلکاروں کی قربانیوں کے عیوض ان کی دلجوئی کے ساتھ ساتھ خراج تحسین پیش کیا جاتا رہے گا تاکہ پولیس افسران اور اہلکاروں کی حوصلہ افزائی ہو اور وہ پہلے سے زیادہ اپنی کارکردگی کو بہتر پیش کرسکیں انہوں نے کہا کہ سندھ میں قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں کے اہلکار اپنی ڈیوٹی بہترطور پر ادا کررہے ہیں لیکن پولیس اہلکاروں کی قربانی اور کارکردگی بھی واضح ہے جس پر سندھ حکومت ان کو خراج پیش کرتی ہے انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے محکمہ پولیس کی پہلے بھی مدد کی اور آئندہ بھی کرتے رہیں گے قبل ازیں وزیر اعلیٰ سندھ نے شہداء کی یادگار پر شمع روشن کی ۔ قبل ازیں ایس ایس پی خیرپور پیر محمد شاہ نے اپنے خطبہ استقبالیہ میں وزیر اعلیٰ سندھ کو بتایا کہ خیرپور ضلع کو مختلف چیلنجز کا سامنا تھا اور پولیس کی جدید تربیت کے بعد نوجوان پولیس اہلکاروں نے بہادری اور جرات سے پولیس کا نام روشن کیا ہے اور قوم کے ان سپوتوں نے امن و امان کے لیے بے شمار قربانیاں دیں ہیں جس کے نتیجے میں 115 پولیس افسران اور اہلکار نے جام شہادت نوش کیاانہوں نے مزید تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ خیرپور ضلع میں 66 پولیس تھانوں میں سے 26 پولیس تھانوں پر پولیس کی مطلوبہ نفری موجود نہیں ہے اس کے علاوہ 13 پولیس اسٹیشن بغیر موبائیل گاڑیوں کے کام کررہی ہیں پولیس افسران کی کارکردگی کو بہتر کرنے کے لیے ہر ماہ ایک ایس ایچ او کا بہتر کارکردگی ایوارڈ دیا جاتا ہے انہوں نے وزیر اعلیٰ سندھ کویقین دلاتے ہوئے کہا کہ خیرپور کو امن کا گہوارا بنائیں گے ۔اس موقع پر تقریب میں شہید ہوجانے والے اور محکمہ میں بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے افسران و اہلکاروں میں نقد رقوم ، سرٹیفیکیٹ اور ایوارڈ تقسیم کیے ۔دریں ثناء وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے منگنواری کے قریب گوٹھ سہاگ میں ڈائریکٹر لیبر سندھ ڈاکٹر غلام مصطفی سہاگ سے ان کے والدغلام نبی سہاگ کی وفات پر ان سے تعزیت کی اور فاتحہ خوانی کی۔

مزید : کراچی صفحہ اول