افسران تحقیقات کے دوران شواہد کا باریک بینی سے جائزہ لیں : عارف نواز خان


لاہو ر(کرائم رپورٹر)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے کہا ہے کہ زینب قتل سمیت دیگر کیسز کی انویسٹی گیشن کے دوران جدید سائنسی تکنیک کے استعمال کے ساتھ تمام شواہد اور حقائق کا باریک بینی سے جائزہ لیا جائے اور دوران ریمانڈ ہی تفتیش کو مکمل کرنے کے ساتھ یہ بھی یقینی بنایا جائے کہ تفتیش میں کوئی کمی نہ رہے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ تمام کیسز کی تفتیش کے مراحل کو جلد از جلد مکمل کیا جائے تاکہ متاثرہ فیملیز کو انصاف کی فراہمی کا عمل فوری مکمل کیا جاسکے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنٹرل پولیس آفس لاہور میں قصور جے آئی ٹی کے اہم اجلاس میں افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کیا ۔ اجلاس میں جے آئی ٹی سربراہ محمد ادریس، ایڈیشنل آئی جی انویسٹی گیشن، ابوبکر خدابخش اور آر پی او شیخوپورہ ذوالفقار حمید سمیت دیگر اعلیٰ افسران موجود تھے ۔ اس موقع پر جے آئی ٹی سربراہ محمد ادریس نے زینب قتل سمیت دیگر کیسز کے ملزم محمد عمران سے ہونے والی تفتیش کی پیش رفت کے متعلق آئی جی پنجاب کو بریفنگ دی ۔ آئی جی پنجاب نے افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ تفتیش میں مصروف افسران و اہلکار شب و روز محنت سے کیسز کے تمام پہلوؤں کا جائزہ لیں اور تمام واقعات کے حقائق اکٹھے کرتے ہوئے مفصل اور جامع رپورٹ تشکیل دیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کیس کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے تفتیش کی رفتار کو بڑھایا جائے اورجدید تقاضوں کے مطابق تفتیش کے تمام پہلوؤں کو بھی ملحوظ خاطر رکھا جائے۔

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...