والدین اور ملزموں نے سمجھوتہ کر لیا ، بتائیں سول سوسائٹی متاثرہ فریق کیسے ہے ؟


اسلام آباد (آن لائن ) سپریم کورٹ نے شاہ زیب قتل کیس میں اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کرتے ہوئے حکم دیا ہے کہ اگراٹارنی جنرل مصر و ف ہوئے تو ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پیش ہوں ، دوران سماعت جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ریمارکس دیئے کہ ہائیکورٹ نے سپریم کو ر ٹ کے احکامات کو بائی پاس کر کے حکم جاری کیا جبکہ چیف جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا سپریم کورٹ مقدے کے میرٹ کو نہیں دیکھ رہی بلکہ ہم نے یہ دیکھنا ہے کہ کیس دہشت گردی کا ہے یا نہیں، بدھ کو کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی، شاہ زیب قتل کیس کے مرکزی ملزم شارخ جتوئی سمیت دیگر دو ملزم سراج تالپور اور سجاد تالپور عدالت میں پیش ہوے دوران سماعت سول سوسائٹی کے نمائندے جبران ناصر کے وکیل فیصل صدیقی نے دلائل دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ مقدمہ میں ریاست اور ملزماموں کاگٹھ جوڑ نظر آ تا ہے اس پر جسٹس آصف سعید کھوسہ بولے اگرایساہوتولوگوں کے عدالت آنے کاراستہ کھل جائے گا، جبکہ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ گٹھ جوڑ کادوسرانام فراڈ ہے لیکن گٹھ جوڑ سے تیسرا فریق کیسے متاثر ہوگا، ہمیں یہ راستہ کھولتے ہوئے سو مرتبہ سوچنا ہوگا، جسٹس آصف سعید کھوسہ نے خدشہ ظاہر کیا کہ ایسانہ ہواس راستے کاغلط استعمال کیاجائے ،قانون کیسے بنانا ہے یہ پارلیمنٹ کو نہیں بتا سکتے، حق دعویٰ کا سوال قانون سازوں نے اوپن چھوڑا ہے، فیصل صدیقی نے کہا اپیل دائر کرنے کا کوئی حتمی طریقہ کار قوانین میں نہیں ہے، چیف جسٹس نے ا ستفسا ر کیا کہ یہ بتائیں سول سوسائٹی متاثرہ فریق کیسے ہیں؟ شاہ زیب کے والدین متاثرہ فریق ہیں، کسی این جی او کیخلاف نہیں ہوں، چیف جسٹس نے کا کہنا تھا متاثرہ فریق ثابت کریں اس کے حقوق متاثر ہوئے ہیں، اگر ہم نے اجازت دیدی تو پھر اس چیز کا غلط فائدہ اٹھایا جا ئیگا ، ہمیں حق دعویٰ کے ایشو پر مطمئن کریں، فیصل صدیقی نے کہا فوجداری مقدمات میں اپیل دائر کرنے کا جواز اوپن ہے، اوپن جواز کا غلط استعما ل نہیں ہونا چاہیے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ والدین اور ملزموں نے سمجھوتہ کر لیا ہے، این جی او یا سول سوسائٹی کا حق دعویٰ کیسے بن جاتا ہے، ریاست نے بھی فیصلہ کیخلاف اپیل دائر نہیں کی، جسٹس کھوسہ نے ریمارکس دیے کہ مقدمے میں قصاص اوردیت کا ایشو بھی نہیں ہے، چیف جسٹس نے استفسارکیا کہ کیا ہم 185/3 کے تحت اپیل کو 184/3 میں تبدیل کر سکتے ہیں، بعد ازاں عدالت نے
اٹارنی جنرل اور بابر اعوان کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت آج جمعرات تک ملتوی کردی ۔
سپریم کورٹ

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...