چیف جسٹس نے خیبر پختونخوا میں کمسن ملازمہ کی پراسرار ہلاکت کاازخود نوٹس لے لیا


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے خیبرپختونخوا کے وزیر مشتاق غنی کے بھائی کے گھر کام کرنیوا لی ملازمہ کی ہلاکت کے واقعے کا ازخودنوٹس لیتے ہوئے آئی جی خیبر پختونخوا کو 3 دن میں رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کردی ۔علاوہ ازیں ایبٹ آباد میں خیبر پختونخوا کے وزیر ہائر ایجوکیشن مشتاق غنی کے بھائی کے گھر میں 11 سالہ ملازمہ مصباح کی ہلاکت معمہ بن گئی ہے،فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی کی سفارشات پر جوڈیشل مجسٹریٹ نے بچی کی قبرکشائی کی اجازت دیدی۔فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی نے کمسن ملازمہ کی قبرکشائی اور پوسٹمارٹم کی سفارش کی تھی جس پر پولیس نے جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں قبرکشائی کی درخواست جمع کرائی تھی۔عدالت نے بچی کی قبر کشائی کرنے کی اجازت دیدی ہے جس کے بعد کمسن ملازمہ مصباح کی قبر کشائی آج کی جائیگی۔پوسٹمارٹم کے ذریعے معلوم کیاجائیگا کہ موت تشدد سے ہوئی یا ڈاکٹروں کی غفلت سے یا وجہ کچھ اورتھی۔پولیس ذرائع کے مطابق بچی کے والدین موت کو طبعی موت قرار دے رہے ہیں اور وہ قبرکشائی کیلئے راضی نہیں ہیں۔یاد رہے 27 جنوری کو شعیب غنی کے گھر کام کرنیوالی ملازمہ مصباح کی حالت خراب ہونے پر اسے بینظیر بھٹو شہید ہسپتال ایبٹ آباد لایا گیا تھا جہاں وہ دم توڑ گئی تھی۔لیکن واقعے کی تحقیقات سے قبل ہی خیبر پختونخوا پولیس کی جانب سے بچی کی ہلاکت پر وضاحتی بیان سامنے آگیا تھا جس میں کہا گیا تھا 11 سالہ مصباح اپنی بڑی بہن کے ہمراہ بطور گھریلو ملازمہ کام کرتی تھی، بچی کی طبیعت 25 جنوری کو پھل کھانے کے بعد اچانک خراب ہوئی،اسے ہسپتال منتقل کیا گیا، لیکن وہ جانبر نہ ہوسکی۔پولیس بیان کے مطابق بچی کو سانس کی موروثی بیماری تھی جس کا 4 سالہ بھائی بھی سانس کی بیماری سے فوت ہو چکا ہے۔خیبر پختونخوا کے وزیر ہائر ایجوکیشن مشتاق غنی نے اس حوالے سے اپنے بیان میں کہا تھا انہیں بھی مصباح کی موت کا اتنا ہی دکھ ہے جتنا اس کے گھر والوں کو ہے۔مصباح ہما ر ے ہاتھوں میں پلی بڑھی ، اگر کوئی مصباح کی موت کی تحقیقات کرانا چاہتا ہے تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں، فضول قسم کے پگڑیاں اچھالنے والے پروپیگنڈے ہورہے ہیں۔ہر ایک شخص پوائنٹ اسکورنگ میں لگا ہوا ہے اس معاملے میں میرا رویہ مصباح کے والد کی طرح کا ہو گا۔
از خود نوٹس

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...